جنوبی پنجاب میں شوگر ملز کی بندش کا معاملہ تشویشناک ہے‘ محمود الحسن چیمہ

جنوبی پنجاب میں شوگر ملز کی بندش کا معاملہ تشویشناک ہے‘ محمود الحسن چیمہ

لیاقت پور (نامہ نگار)چیئرمین قائمہ کمیٹی واٹراینڈ ایریگیشن پنجاب اور مسلم لیگ ن کے رکن پنجاب اسمبلی چوہدری محمودالحسن چیمہ نے کہا ہے کہ مظفرگڑھ ،بہاول پوراور رحیم یارخان کی تینوں شوگرملیں عدالتی فیصلے پر بند ہیں،اس لئے اس مسلے کا حل بھی معزز عدلیہ کے پاس ہے ،کاشت کارتنظیموں اور (بقیہ نمبر26صفحہ12پر )

گنے کے کاشت کاروں کی فریاد اور اپیل ہے کہ سپریم کورٹ آف پاکستان فوری نوٹس لیتے ہوئے مختصراوقت کے لئے ایک اعلیٰ سطحی کمیشن تشکیل دے ،جو جنوبی پنجاب کے ان تینوں اضلاع کا وزٹ کر کے شوگرملز کی بندش کے بعد کی صورت حال اور گنے کے کاشت کاروں کے مسائل کا جائزہ لے اور حقائق کی نشان دہی کرئے ،اورحقائق کی رشنی میں ہماری استدعا ہے کہ انسانی ہمدردی کی بنیاد پر گنے کے کاشت کاروں اور ان کے بال بچوں کی پریشانی اور تکلیف کو دیکھتے ہوئے اس مسلے کا فوری حل نکالا جائے ،تاکہ لاکھوں ایکڑ رقبے پر کاشت کئے گئے اضافی گنے کی کرشنگ کا بندوبست ہو سکے ،بصورت دیگر کھیتوں میں پڑئے گنے کی بربادی اورضیاع سے جہاں گنے کے متاثرہ کاشت کاروں کا ناقبال تلافی نقصان ہو جائے گا،وہاں یہ بہت بڑا قومی نقصان بھی ہو گا،ایک ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جنوبی پنجاب میں شوگرملز کی بندش کامعاملہ غیر معمولی حد تک تشویش ناک اور اعلیٰ عدلیہ وحکومت کی فوری توجہ کامتقاضی ہے ،چوہدری محمودالحسن چیمہ کا کہنا ہے کہ گنے کے کاشت کاروں کا ہم عوامی نمائندوں پر بھی شدید دباو ہے ،کہ اس کڑئے وقت میں ان کے مسلے کا حل نکالا جائے ۔

محمود الحسن چیمہ

مزید : ملتان صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...