جب جاپان میں زینب جیسی معصوم بچی کو ریپ کیا گیا تو پھر لوگوں اور حکومت نے کیا کیا؟ وہ بات جو پاکستانیوں کو ضرور معلوم ہونی چاہیے

جب جاپان میں زینب جیسی معصوم بچی کو ریپ کیا گیا تو پھر لوگوں اور حکومت نے کیا ...
جب جاپان میں زینب جیسی معصوم بچی کو ریپ کیا گیا تو پھر لوگوں اور حکومت نے کیا کیا؟ وہ بات جو پاکستانیوں کو ضرور معلوم ہونی چاہیے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

ٹوکیو / اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) سینئر صحافی و اینکر پرسن جاوید چوہدری کا کہنا ہے کہ جب جاپان میں تین امریکی فوجیوں نے ایک چھوٹی بچی کا ریپ کیا تو پوری جاپانی قوم دنیا کی واحد سپر پاور کے خلاف اٹھ کھڑی ہوئی اور اسے معاہدے تبدیل کرنے اور فوجیوں کو جاپان میں سزا بھگتنے پر مجبور کردیا۔

اپنے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے جاوید چوہدری نے بتایا کہ جاپان میں اوکی ناوا جزیرے پر امریکی فوجی چھاﺅنی قائم ہے، 4 ستمبر 1995 کو تین امریکی فوجیوں نے ایک گاڑی کرائے پر لی اور راہ چلتی 12 سالہ بچی کو اغوا کیا اسے ریپ کیا اور اسے زخمی حالت میں ویرانے میں پھینک گئے۔ خبر اخبارات میں شائع ہوئی تو اگلے روز پورے جاپان میں مظاہرے شروع ہوگئے، قوم 12 سال کی بچی کے ساتھ کھڑی ہوگئی، جاپانیوں نے چندہ اکٹھے کرکے امریکی اخبارات میں ” نو بیس ، نو ریپ“ کے اشتہارات چھپوائے۔

1960 میں امریکہ اور جاپان میں معاہدہ ہوا تھا کہ کسی بھی جرم میں جاپان امریکی فوجی کو گرفتار نہیں کرے گا بلکہ امریکہ کو تحریری شکایت کرے گا جس پر امریکہ اپنے فوجی اہلکاروں کو امریکہ لے جا کر انہیں سزا دے گا۔اس واقعے کے بعد جاپانی قوم نے یہ معاہدہ ماننے سے انکار کردیا جس کے بعد امریکی صدر بل کلنٹن اور جاپانی وزیر اعظم ہاشی موتو کے درمیان ملاقات ہوئی اور معاہدہ تبدیل کردیا گیا۔

صرف 25 روز بعد 29 ستمبر کو تینوں ملزمان کو جاپان کے حوالے کردیا گیا ، جس کے بعد انہوں نے جاپان میں 7، 7 سال قید بھگتی اور 2003 میں واپس امریکہ گئے جہاں ان کا کورٹ مارشل کیا گیا۔اس واقعے کے بعد امریکی صرف بیس تک محدود ہو کر رہ گئے اور جاپان نے ان کی آزادانہ نقل و حرکت پر پابندی عائد کری۔ امریکہ نے چھاﺅنی کی 21 فیصد زمین بھی جاپان کے حوالے کردی۔

ایک پریس کانفرنس کے دوران بیس کمانڈر ایڈمرل رچرڈ سی میک نے غلطی سے یہ کہہ دیا’ میرے جوان بے وقوف تھے، میں نے انہیں کئی بار کہا کہ گدھو جتنے پیسوں میں تم نے گاڑی لی اتنے پیسوں میں تم لوگ کسی طوائف کو پکڑ لیتے‘۔

جاپانیوں نے ان الفاظ پر بھی شدید احتجاج شروع کردیا جس کے بعد امریکی حکومت نہ صرف ایڈمرل رچرڈ کو عہدے سے ہٹانے ، بلکہ اسے ڈی موٹ کرنے اور قبل از وقت ریٹائر کرنے پر بھی مجبور ہوگئی۔

جاوید چوہدری کا کہنا تھا کہ قومیں اس طرح برتاﺅ کرتی ہیں جو ایک چھوٹی بچی کے ریپ پر اکٹھی ہوجاتی ہیں اور دنیا کی واحد سپر پاور کو پیچھے ہٹنے اور معاہدے تبدیل کرنے پر مجبور کردیتی ہیں، بدقسمتی سے ہمارے ملک میں یہ اتحاد و اتفاق نہیں ہے۔

ویڈیو دیکھیں

مزید : قومی /بین الاقوامی /انسانی حقوق /جرم و انصاف /علاقائی /اسلام آباد /پنجاب /قصور