عیاش شخص دوست کی بیوی لے اڑا، پولیس سرپرست بن گئی

عیاش شخص دوست کی بیوی لے اڑا، پولیس سرپرست بن گئی
عیاش شخص دوست کی بیوی لے اڑا، پولیس سرپرست بن گئی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لودھراں (ویب ڈیسک)دھوکے باز دوستی کا ڈرامہ رچا کر دوست کی بیوی، رقم اور موٹرسائیکل لے اڑا، 58 سالہ عطاءاللہ حصول انصاف کیلئے دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور، مقامی پولیس بھی ملزم کی سرپرست بن گئی، ایف آئی آر درج کروانے کے باوجود بھی تفتیشی آفیسر نے مبینہ طور پر رشوت کے عوض ملزم کے ساتھ ساز باز ہوگیا۔

روزنامہ خبریں کے مطابق بستی غریب آباد چک نمبر 97 ایم لودھراں کے رہائشی عطاءاللہ نے بتایا کہ اس کی شادی 23 سال قبل حضور بی بی سے ہوئی جس کے بطن سے 6 بچے بھی ہیں اور وہ اپنے گھر میں بیوی بچوں کے ساتھ خوش و خرم زندگی بسر کررہا تھا کہ ڈسٹرکٹ ہسپتال لودھراں میں دوائی کی غرض سے جانا ہوا اور وہاں پر ان کی ملاقات مرید حسین ولد اللہ دتہ نامی شخص سے ہوئی جو کہ بدنام زمانہ عیاش تھا جس کا ہمیں علم نہ تھا۔ بعدازاں ایک دن وہ اپنی فیملی کے ہمراہ میرے گھر آیا اور اس طرح سے آنا جانا شروع ہوگیا اور دوستی ہوگئی مگر میں اس کے ناپاک ارادوں سے انجان تھا، میں اس کی مکاری کو نہ سمجھا اور اس کو ایک شریف انسان سمجھ بیٹھا۔ اسی دوران اس نے میری بیوی کے ساتھ ناجائز مراسم قائم کرلئے جس کا مجھے بالکل علم نہ تھا اور بڑی چالاکی کے ساتھ میرا مکان، میری ہی بیوی کے ساتھ مل کر مجھے سبز باغ دکھا کر سیل کروادیا اور مکان کی رقم جو کہ میں نے اپنی بیوی کے پاس ہی رکھ دی تھی اور ہمیں لودھراں محلہ رحمن پورہ میں ایک کرایہ کے مکان میں لے آیا اور کہا کہ میں آپ کو انہی پیسوں میں کوئی اچھا مکان دلوادیتا ہوں اور پھر بعد میں چالاکی کے ساتھ اچھا کاروبار کروانے کیلئے مجھے میری فیملی کے ساتھ اپنے گاﺅں پٹواری والا پل درگاہ پور لے آیا اور اسی دوران میں نے اس درندہ صفت شخص کو اپنی بیوی کے ساتھ نازیبا حالات میں پکڑلیا اور اسے اپنے گھر سے جانے کا کہا جس پر وہ طیش میں آگیا اور مجھے ہی الٹا دھمکی دی کہ اگر کسی کے سامنے اپنی زبان کھولی یا اپنی بیوی کو کچھ کہا تو میں تمہیں جان سے مار ڈالوں گاجس پر میں فوراً اپنی بیوی بچوں کو لے کر لودھراں آگیا۔

اس کے بعد میں بہاولپور محنت مزدوری کیلئے چلا گیا جب میں ایک ہفتہ بعد آیا تو میں نے اپنا گھر خالی پایا، اردگرد کے محلہ داروں سے معلوم کرنے پر پتہ چلا کہ عیاش مرید حسین میری غیر موجودگی میں میری بیوی بچوں اور گھر میں موجود رقم 3 لاکھ روپے، موٹرسائیکل نمبر BRN-8269 اور گھر کا مکمل سامان بھی لے اڑا، جس پر میں نے اس کو بہت تلاش کیا اور بالآخر میں نے انہیں تلاش کرلیا اور مرید حسین نے مجھے میری بچے دے دئیے اور میری بیوی، رقم، موٹرسائیکل اور دیگر گھر کا سامان دینے سے انکاری ہوگیا، میں نے اس کی بہت منت سماجت کی جس پر وہ طیش میں آگیا اور اس نے مجھے میرے بچوں کے سامنے تشدد کا نشانہ بنایا اور میرے معصوم بچوں کے سر سے چھت چھین لی اب میں اور میرے بچے کھلے آسمان تلے سردی میں بے یارومددگار زندگی کے دن کاٹ رہے ہیں جس پر مقامی تھانہ صدر لودھراں میں اس عیاش درندہ صفت کے خلاف درخواست گزاری جس پر اس کے خلاف ایف آئی آر نمبری 728/17درج کرلی گئی ، ملزم بااثر ہے اس لئے مقامی پولیس بھی مبینہ طور پر بھاری رشوت کے عوض ملزم کی سرپرست بن گئی۔

عطاءاللہ نے اعلیٰ حکام، پی آر او ملتان اور ڈی پی او لودھراں اپیل کی ہے کہ اس عیاش درندے کے خلاف سخت کارروائی کرکے اس کے چنگل سے میری بیوی، میری رقم اور میرا موٹرسائیل دلوایا جائے اور اسے سخت سزا دی جائے۔

مزید : جرم و انصاف /علاقائی /پنجاب /لودھراں