دہشتگردی کے الزام میں گرفتار کمسن ملزم کی قید سزا کالعدم

دہشتگردی کے الزام میں گرفتار کمسن ملزم کی قید سزا کالعدم

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورہائی کورٹ کے جسٹس روح الامین اور جسٹس ایوب خان پرمشتمل دورکنی بنچ نے دہشت گردی کے الزام میں گرفتار14سالہ ملزم کی مجموعی طورپر19سال قید بامشقت کی سزاکالعدم قرار دے دی ملزم کی جانب سے اجمل کے مہمند ایڈوکیٹ نے اپیل کی پیروی کی استغاثہ کے مطابق 14سالہ نوراسلام ساکن یکہ توت کو محکمہ انسداددہشت گردی نے کچھ عرصہ قبل گرفتارکیاتھا جس کے قبضے سے تین کلوگرام بارودی مواد برآمد ہواتھاانسداددہشت گردی کی خصوصی عدالت نے ملزم کو مجموعی طورپر19سال قید بامشقت کی سزاسنائی تھی جس کے خلاف پشاورہائی کورٹ میں اپیل دائرکی گئی اس موقع پر عدالت کو بتایاگیاکہ اپیل کنندہ کوناکافی ثبوتوں کے ساتھ سزاسنائی گئی ہے جبکہ استغاثہ کے گواہوں کے بیانات میں بھی تضادتھالہذاماتحت عدالت کے فیصلے کوکالعدم قرار دیا جائے فاضل بنچ نے دلائل مکمل ہونے پراپیل منظورکرکے سزاکالعدم قرار دے دی ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...