پیپلز پارٹی اور (ن) لیگ نے نیب ختم نہیں کرنے دیا اب بھگتیں : مولانا فضل الرحمان

پیپلز پارٹی اور (ن) لیگ نے نیب ختم نہیں کرنے دیا اب بھگتیں : مولانا فضل الرحمان

پشاور( آ ئی این پی) جمعیت علماء اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ پیپلز پارٹی اور (ن) لیگ نے نیب ختم نہیں کرنے دیا اب بھگتیں اور اسی نیب کے ذریعے اپوزیشن کوسیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پشاور میں جمعیت علمائے اسلام خیبر پختونخوا کے زیر اہتمام سابق امیر جمعیت علماء اسلام صوبہ خیبر پختونخوا و ممبر قومی اسمبلی شیخ امان اللہ مرحوم کی تعزیتی ریفرنس کے حوالے سے نشتر ہال پشاور میں منعقدہ پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ موجودہ حکومت پرویز مشرف کی طرز پر نیب سیاسی انتقام لے رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ18ویں ترمیم کے وقت ہم نے کہا تھا کہ نیب قوانین کو تبدیل کیا جائے لیکن ن لیگ ،پیپلزپارٹی نے نیب قوانین کوختم کرنے سے انکار کیاتھا اب بھگتیں۔انہوں نے کہا کہ خیبر پختونخوا میں احتساب کمیشن ختم کیاجاسکتاہے تووفاق میں نیب کیوں نہیں،یہ کرپشن کی مخالفت کرتے ہیں لیکن خود کرپشن میں ڈوبے ہوئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ بین الاقوامی لابی ملکی معاملات میں ڈکٹیٹ کرتی ہے۔پاکستان کی نظریاتی شناخت کو تبدیل کیا جارہا ہے۔جے یو آئی (ف) کے سربراہ نے حکومت کی معاشی پالیسیوں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ قرصہ نہ لینے کی باتیں کرنے والوں نے روزانہ 15 ارب کے قرضے لئے، اب ہر شخص ڈیڑھ لاکھ روپے کا مقروض ہے، زرمبادلہ ذخائر نصف اور اسٹاک ایکسچینج کریش کر گئی، لاکھوں گھر گرا دیئے اور لاکھوں لوگ بے روزگار ہو گئے لیکن اب بھی آئی ایم ایف کی شرائط جاری ہیں۔مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ دوسروں کو انڈیا سے دوستی کے طعنے دیتے تھے اب خود کرتارپور کھول دیا اور فائدہ بھی نہ ہوا، کرتارپورقادیانیوں کے لیے کھولاگیاہے جب کہ آسیہ بی بی کی بریت عالمی اداروں نے مالی مدد سے مشروط کی اور فیصلے کے بعد قادیانیوں کا لندن میں اجتماع ہوا جس میں عمران خان سے وعدے ایفاء کرنے کا کہا گیا۔سربراہ جے یو آئی کا مزید کہنا تھا کہ آئین مقدس صحیفہ تو ہے لیکن اس پرعمل نہیں ہو رہا، پاکستان تب ہی مضبوط ہو گا جب آئین پر عمل ہو گا، دھاندلی کے ذریعے بیرونی ایجنٹ مسلط کیے گئے جنہوں نے ان کومسلط کیا وہ ان سے شکوہ توکریں گے، کب تک دھاندلی ہوتی رہے گی اور اسٹیبلشمنٹ کردار ادا کرتی رہے گی۔

مزید : صفحہ اول


loading...