24کروڑ ڈالر کمی سے زرمبادلہ کے ذخائر 13ارب 60کروڑ ڈالر رہ گئے : سٹیٹ بینک

24کروڑ ڈالر کمی سے زرمبادلہ کے ذخائر 13ارب 60کروڑ ڈالر رہ گئے : سٹیٹ بینک

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک) ملکی زرمبادلہ کے ذخائر میں 24 کروڑ ڈالر کی کمی سے ذخائر 13 ارب 60 کروڑ ڈالر کی سطح پر رہ گئے۔ مرکزی بینک کے مطابق 4 جنوری کو ختم ہونے والے ہفتے میں میں ملکی ذخائر 24 کروڑ ڈالر سے کم ہوکر 13 ارب 60 کروڑ ڈالر کی سطح پر آ گئے ہیں۔سٹیٹ بینک کے ذخائر 23 کروڑ ڈالر کمی سے 7 ارب 4 کروڑ ڈالر جبکہ کمرشل بینکوں کے زرمبادلہ ذخائر 6 ارب 54 کروڑ ڈالر کی سطح پر آ چکے ہیں۔مرکزی بینک کا کہنا ہے کہ عالمی ادائیگیوں کے باعث زرمبادلہ کے زخائر دباؤ کا شکار ہے جس کی وجہ سے ملکی زرمبادلہ ذخائر گراوٹ کا شکار ہے۔سٹیٹ بینک کے مطابق تارکین وطن نے رواں مالی سال کی پہلی ششماہی میں 10.71 ارب ڈالر پاکستان بھجوائے۔سٹیٹ بینک نے بتایا کہ رواں مالی سال کی ترسیلات گزشتہ مالی سال کی پہلی ششمالی سے 10 فیصد زائد ہیں، دسمبر میں ترسیلات زر کا حجم ایک ارب 69 کروڑ ڈالر رہا۔

سٹیٹ بینک

واشنگٹن (آئی این پی ) امریکی کریڈٹ ریٹنگ ایجنسی موڈیز نے پاکستان کے زرمبادلہ کے ذخائر پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کا حجم دو ماہ درآمدت بل سے بھی کم ہے ۔موڈیز کے مطابق پاکستان کا کرنٹ اکا ؤ نٹ خسارہ قابو میں نہیں آرہا اور زرمبادلہ زخائر پر دبا برقرا ر ہے جبکہ امپورٹ کیلئے زرمبادلہ کے ذخائر میں بھی کمی ہوئی ہے۔کریڈٹ ریٹنگ ایجنسی نے خبردار کیا ہے کہ پاکستان کے زرمبادلہ ذخائر اگلے ماہ قرض ادائیگیوں کے کل حجم سے بھی کم ہیں۔

مزید : صفحہ اول


loading...