’’سرپر پیار کیوں دیا ؟ ‘‘ خاتون ڈی پی او نے 90الہ تاجر کو حوالا بھجوا دیا

’’سرپر پیار کیوں دیا ؟ ‘‘ خاتون ڈی پی او نے 90الہ تاجر کو حوالا بھجوا دیا

عارف والا (نمائندہ پاکستان، نامہ نگار ) عارف والا میں ڈی پی او پاکپتن کی کھلی کچہری میں مرکزی انجمن تاجران کے صدر کو ڈی پی او پاکپتن ماریہ محمود کو سر پر پیار دینا مہنگا پڑ گیا اور جیل کی سلاخوں کی ہو ا کھانا پڑی تفصیل کے مطابق ٹی ایم اے TMAکے ہال میں ڈی پی او پاکپتن ماریہ محمود کی کھلی کچری کا انعقاد ہوا جس میں سماجی کار کنان، سیاسی کارکنان،تاجر برادری اور مقامی صحافیوں نے شرکت کی اس موقع پر مرکزی انجمن تاجران کے صدر الحاج صوفی رشید سٹیج پر چلے گئے اور ڈی پی او پاکپتن ماریہ محمود کو بیٹی سمجھ کر پیار دینے کی کوشش کی 90 سالہ صوفی رشید نے جب سر پر پیار دینے کی کوشش کی تو ڈی پی او نے صوفی رشید کو دھکا دیا اور سنگین نتائج کی دھمکیاں دیں ڈی پی او پاکپتن نے غصہ میں آکر جھوٹے مقدمات تھانہ سٹی میں درج کروا کے مرکزی انجمن تاجران کے صدر صوفی رشید کو حوالا ت میں بند کروادیا یہ خبر جنگل کی آگ کی طرع پورے شہر میں پھیل گئی اسی وقت تھانہ سٹی میں تمام تاجر تنظیموں سیا سی سماجی مذہبی اور مقامی صحافیوں کی کثیر تعداد جمع ہو گئی اور مطالبہ کیا کہ صوفی رشید جیل سے باہر نکالا جائے دو گھنٹے تاجروں نے احتجاج کیا اور انتظامیہ خاموش رہی عارف والا کی تمام تاجر برادری ، سماجی کارکن ، مذہبی اہلسنت کے راہنماء ، وکلاء برادری ،کسان اتحاد کے راہنماء اور کارکن بڑی تعدا د نے لاری اڈاکا رخ کیا اور شہر کے چاروں اطراف کی سڑکیں بلاک کر دیں جس سے ٹریفک کی لمبی قطاریں لگ گئیں رات دو بجے کے قریب مقامی ایم پی اے چوہدری نعیم ابراہیم کی آر پی او شارق کمال سے مذاکرات ہوئے جس کے نتیجہ میں صوفی رشید کی رہائی عمل میں لائی گئی جب صوفی رشید کو رہا کیا گیا تو سڑکیں ٹریفک کے لیے کھول دی گئی اور احتجاج ختم کر دیا گیا صبح سویرے صوفی رشید کے بیٹے منور اقبال نے پریس کانفرنس کرتے ہو ئے صحافیوں کو بتایا ہم انتظامیاں کو 48گھنٹے کی ڈیڈ لائین دیتے ہیں جھوٹے مقدمے بنائے ہیں ان کو ختم کیا جائے اور ڈی پی او کا تبادلہ کیا جائے بصورت دیگر احتجاج کیا جائے گا ذرائع سے پتہ چلا ہے کہ اس معمالہ کو ختم کرنے کے لیے RPOساہیوال اور تاجروں کے کل مذاکرات متوقع ہے ڈی پی او پاکپتن سے موقف کے لئے رابطہ نہ ہوسکا۔

حوالات بھجوادیا

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...