’’ مجھے یہ صدمہ آج بھی ہے کہ ۔ ۔ ۔‘‘ سابق وزیراعظم نے ملاقات کیلئے آئے لیگی رہنمائوں کو ایسی بات کہہ دی کہ کسی کی بھی آنکھیں نم ہوجائیں 

’’ مجھے یہ صدمہ آج بھی ہے کہ ۔ ۔ ۔‘‘ سابق وزیراعظم نے ملاقات کیلئے آئے ...
’’ مجھے یہ صدمہ آج بھی ہے کہ ۔ ۔ ۔‘‘ سابق وزیراعظم نے ملاقات کیلئے آئے لیگی رہنمائوں کو ایسی بات کہہ دی کہ کسی کی بھی آنکھیں نم ہوجائیں 

  

لاہور (ویب ڈیسک)مسلم لیگ (ن) کے قائد اورسابق وزیراعظم نواز شریف کا کہنا ہے کہ جب جیل میں تھا تو بیگم کلثوم نوازکی طبعیت خراب ہونے پرجیل حکام کوکہا تھا کہ ٹیلی فون کروا دیں لیکن ٹیلی فون تک نہیں کروایا ، یہ صدمہ آج بھی ہے کہ آخری ایام میں ان سے بات تک نہیں کرسکا۔

انہوں نے کہاکہ جو سلوک ہو رہا ہےباہرآ کر بتاؤں گا،مسلم لیگ (ن) کے ترقیاتی کاموں پر اختلاف کرنے والے آج تعریف کررہے ہیں،پتہ نہیں جیل میں کیسی بجلی آتی ہے،ہیٹر توگرم ہوتانہیں،پنجاب کی اہل حکومت کی جگہ نااہل حکومت نے لے لی جب کہ کے پی کے کی نااہل حکومت کو دوبارہ اہل قرار دیا گیا ۔

کوٹ لکھپت جیل میں ملاقات کے لیے آنے والے پارٹی رہنماؤں کے وفود سے گفتگو کرتے ہوئے میاں نوازشریف نے کہا کہ شہباز شریف کے ساتھ ناروا سلوک روا رکھا جارہا ہے،انہوں نے پنجاب میں دن رات کام کیا اور صلہ یہ ملا؟پنجاب میں میٹرو 11 ماہ میں مکمل ہوئی اور کے پی کے میں اب بھی دھول اڑ رہی ہے، جیل میں (ن) لیگی رہنماؤں اوراہل خانہ سے ملاقات کے دوران نواز شریف جسمانی طور پر کمزور نظر آرہے تھے،ان کی صحت ناساز تھی لیکن وہ مسکرا کر کچھ چھپاتے رہے،انہوں نے کہا کہ میری صحت بہترہے،ملاقات کے دوران نواز شریف لیگی رہنماؤں سے بیگم کلثوم نواز کا ذکر بھی کرتے رہے۔

مزید : قومی /ڈیلی بائیٹس