حکومت نے تحریری حکم نامہ ملنے تک بلاول بھٹو اور وزیراعلیٰ سندھ کا نام ای سی ایل سے نہ نکالنے کا فیصلہ کیوں کیا ہے؟ اندرونی کہانی سامنے آ گئی

حکومت نے تحریری حکم نامہ ملنے تک بلاول بھٹو اور وزیراعلیٰ سندھ کا نام ای سی ...
حکومت نے تحریری حکم نامہ ملنے تک بلاول بھٹو اور وزیراعلیٰ سندھ کا نام ای سی ایل سے نہ نکالنے کا فیصلہ کیوں کیا ہے؟ اندرونی کہانی سامنے آ گئی

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) حکومت پاکستان نے سپریم کورٹ کی جانب سے تحریری حکم نامہ ملنے تک پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اور وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) سے نہ نکالنے کا فیصلہ تو کر لیا ہے مگر اس کے پیچھے وجہ کیا ہے؟ صحافی و اینکر عمران خان نے اندرونی کہانی بتا دی۔

تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ حکومت نے سابق صدر پرویز مشرف کے معاملے کو سامنے رکھتے ہوئے ایسا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پرویز مشرف کے معاملے پر پاکستان مسلم لیگ (ن) کی حکومت کہتی ہے کہ انہیں سپریم کورٹ آف پاکستان کے کہنے پر باہر بھیجا گیا ہے جبکہ سپریم کورٹ کہتی رہی کہ یہ تو حکومت کا استحقاق تھا اور یہ حکومت کی مرضی تھی کہ وہ نام ای سی ایل سے نکالتی یا نہ نکالتی، تو اس معاملے میں تحریری طور پر چیزیں موجود نہیں تھیں۔

انہوں نے کہا کہ حکومت پاکستان نے اس معاملے پر بات چیت کی اور اس نتیجے پر پہنچے کہ جب تک تحریری طور پر سپریم کورٹ کا حکم نامہ نہیں ملتا، بلاول بھٹو زرداری اور مراد علی شاہ کا نام ای سی ایل سے نہیں نکالا جائے گا کیونکہ اگر یہ بھاگ گئے اور کل کو تحریری حکم نامہ بھی نہ ملا تو یہ بھی ہمارے گلے پڑ جائے گا کہ آپ نے بندے بھگا دئیے کیونکہ آپ کی ڈیل ہو گئی۔

مزید : قومی /ڈیلی بائیٹس