ایف سی آر جیسے کالے قانون کا خاتمہ کرکے ترقی کے دروازے قبائلی اضلاع میں کھول دیے:شوکت یوسف زئی

ایف سی آر جیسے کالے قانون کا خاتمہ کرکے ترقی کے دروازے قبائلی اضلاع میں کھول ...
ایف سی آر جیسے کالے قانون کا خاتمہ کرکے ترقی کے دروازے قبائلی اضلاع میں کھول دیے:شوکت یوسف زئی

  


پشاور(ڈیلی پاکستان آن لائن)صوبائی وزیر اطلاعات خیبر پختونخوا  شوکت  یوسفزئی نے کہا ہے کہ قبائل حقیقی معنوں میں اب آزاد ہو گئے ہیں، ایف سی آر غلامی کا نظام تھا جس نے تمام قبائل کو جھکڑ کر رکھا تھا، ایف سی آر جیسے کالے قانون کا خاتمہ کرکے ترقی کے دروازے قبائلی اضلاع میں کھول دیے ہیں ۔

 قبائلی عمائدین کے جرگہ سے خطاب کرتے ہوئےصوبائی وزیر کے پی کے شوکت یوسف زئی کا کہنا تھا کہ اب قبائل کو آئینی آزادی مل چکی ہے اور قبائل کسی بھی شکایت کی صورت میں عدالت جا سکتے ہیں، ایف سی آر کے کالے قانون کے تحت قبائلی عوام غلام کی طرح زندگی گزار رہے تھے اور کسی بھی غلط فیصلے کی شکایت نہیں کرسکتے تھے۔قبائلی اضلاع کی ترقی کے بارے میں صوبائی وزیر نے جرگے کو یقین دلاتے ہوئے کہا کہ آئندہ دس سال میں تمام قبائلی اضلاع کی تقدیر بدل جائے گی، قبائل کی ترقی کے لئے دس سالوں میں 1000 ارب روپے خرچ ہونگے، جس سے یہ تمام اضلاع ملک کے با قی اضلاع کے ہم پلہ بن جائیں گے۔صوبائی وزیر شوکت یوسف زئی نے کہا کہ وزیرستان میں امن لانے کے لئے قبائلی عمائدین نے پاک فوج کے ساتھ مل کر جانی و مالی قربانیاں دی ہیں، وزیرستان میں امن لانا اور اب اس کو برقرار رکھنا قبائلی عوام کے تعاون کے بغیر ناممکن ہے۔ شوکت یوسفزئی نے جرگے کو یقین دلایا کہ قبائل کی تمام محرومیوں کو دور کیا جائے گا اور وزیراعظم عمران خان کی ہدایات اور وژن کے مطابق قبائلی اضلاع کو ترقی کی راہ پر گامزن کیا جائے گا۔

مزید : علاقائی /خیبرپختون خواہ /پشاور


loading...