غیر مسلم وکلاء کے بار الیکشن لڑنے پر پابندی افسوسناک ہے،اعجاز عالم

  غیر مسلم وکلاء کے بار الیکشن لڑنے پر پابندی افسوسناک ہے،اعجاز عالم

  



لاہور(لیڈی رپورٹر)صوبائی وزیر انسانی حقوق واقلیتی امور اعجاز عالم آگسٹین نے پرنٹ میڈیا میں غیر مسلم وکلاء کے الیکشن لڑنے پر پابندی کے حوالے سے بعض اخباروں میں شائع ہونیوالی خبروں پر نوٹس لیتے ہوئے اپنے پیغام میں کہا ہے کہ ملتان بار کی جانب سے ایسی قرارداد پیش کرنا قابل افسوس اقدام ہے کیونکہ تحریک انصاف کی حکومت کی اولین ترجیحات میں امن، بھائی چارہ،مذہبی ہم آہنگی اور رواداری کو فروغ دینا شامل ہے اور اس کے لئے کسی بھی مذہب کی تفریق کئے بغیر اقداما ت یقینی بنائے جا رہے ہیں۔

مگر ملتان بار میں اس طرح قرارداد سے تما م غیر مسلموں کو تکلیف پہنچی ہے۔ آئین پاکستان کے تحت تمام شہریوں کے حقوق برابر ہیں اور وکلاء برادری اس بات کو یاد رکھے کہ پاکستان کے حصول میں عظیم لیڈر قائداعظم نے انتھک محنت کی اور ان کے ساتھ غیر مسلموں کا تاریخی کردار کوئی نہیں بھلا سکتا۔صوبائی وزیر نے کہاکہ غیر مسلموں کی وکالت کے شعبے سے خدمات دیکھی جائیں تو چیف جسٹس ایلوین رابرٹ کارنیلئس کو کون نہیں جانتا،آپ پاکستان کے چوتھے چیف جسٹس تھے جبکہ قیام پاکستان کے بعد عدالتی نظام کی تشکیل اور بہتری میں آپ کااہم کردار ہے جبکہ آپ کی خدمات کے اعتراف میں لاہور میں ایک انڈر پاس آپ کے نام سے منسوب کیا گیا ہے۔جسٹس رستم سہراب جی سدھوا، لاہور ہائی کورٹ اور بعد ازاں سپریم کورٹ آف پاکستان کے جج کے عہدے پرفائز رہے۔ڈاکٹر میرا فیلبوس کا شمار پاکستان کی قابل،محنتی اور بہادر خواتین میں ہوتا ہے جنہوں نے حقوق نسواں کے لئے اہم کردار ادا کیا۔آپ پاکستان کی پہلی خاتون محتسب ہیں۔ دیوان بہادرایس پی سنگھا(سیاستدان)آپ نے تحریک پاکستان میں قائداعظم کے ساتھ مل کر وطن عزیز کے قیام کے لئے جستجو کی۔آپ کا شمار ان عظیم لوگوں میں ہوتا ہے جنہوں نے بلاتفریق مذہب،رنگ ونسل پاکستان کے قیام میں قائداعظم کا ساتھ دیا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1