ایرانی جنرل پر حملہ عالمی قوانین کی شدید خلافورزی تھی،عاکف سعید

ایرانی جنرل پر حملہ عالمی قوانین کی شدید خلافورزی تھی،عاکف سعید

  



لاہور(نمائندہ خصوصی)تنظیم اسلامی کے امیر حافظ عاکف سعید نے امریکہ کی جانب سے عراق کی سرزمین پر پاسداران انقلاب ایران کے ایک اعلیٰ عہدیدار میجرجنرل قاسم سلیمانی کو ڈرون حملے میں قتل کرنے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ حملہ عالمی قوانین کی شدید خلاف ورزی تھی۔ حقیقت میں یہ دہشت گردی کا ایک عمل تھا۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ کی تاریخ بین الاقوامی قوانین اور اخلاقیات کے تمام تقاضوں کو روندنے کی داستانوں سے بھری پڑی ہے۔ امریکہ نے نائن الیون کے بعد تمام بین الاقوامی قوانین اور اخلاقی تقاضوں کو بالائے طاق رکھتے ہوئے افغانستان پر حملہ کرکے امارت اسلامی افغانستان کو ختم کیا۔ اسی طرح اس نے عراق میں WMDکا جھوٹا عذر تراش کر حملہ کیا جس میں لاکھوں لوگ شہید ہو گئے۔

انہوں نے مطالبہ کیا کہ تمام بین الاقوامی اداروں کا فرض بنتا ہے کہ وہ امریکہ کے ایران کے خلاف اس جنگی جرم کا نوٹس لیں۔اسلامی نظریاتی کونسل کے چیئرمین قبلہ ایاز کے اس بیان پرکہ نیب کے بعض قوانین غیر اسلامی ہیں جنہیں درست کرنے کی ضرورت ہے پر تبصرہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم اسلامی نظریاتی کونسل کے اس اقدام کو خوش آئند سمجھتے ہیں۔ لیکن اسلامی نظریاتی کونسل کو بھی چاہیے کہ وہ اپنی سفارشات عوام کے سامنے لانے سے پہلے جید اور ثقہ علماء کو اعتماد میں لے۔ اُنھوں نے آئین کے بعض آرٹیکلز کی طرف توجہ دلاتے ہوئے کہا کہ ہمارے آئین کا آرٹیکل 45صدر کو شخصی معافی کاکلی اختیار دیتا ہے جو کہ صریحاً اسلام کی تعلیمات کے خلاف ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...