دنیا کی سب بڑی "ہیم ٹیکسٹائل" نمائش میں پاکستانی کمپنیوں کی بھرپور پذیرائی

دنیا کی سب بڑی "ہیم ٹیکسٹائل" نمائش میں پاکستانی کمپنیوں کی بھرپور پذیرائی

  



کراچی (اکنامک رپورٹر)جرمنی کے شہر فرینکفرٹ میں جاری دنیا کی سب بڑی "ہیم ٹیکسٹائل" نمائش میں پاکستانی کمپنیوں کو بھرپور رسپانس مل رہا ہے اورماحول دوست پاکستانی پروڈکٹس کو زیادہ پذیرائی مل رہی ہے،امریکااوریورپ سمیت مغربی ممالک نے پاکستانی ہوم ٹیکسٹائل مصنوعات میں گہری دلچسپی کااظہار کیا ہے۔ایکسپورٹرزکو امید ہے کہ اس سال بھی یہ نمائش پرانے خریداروں کو برقرار رکھنے اورنئی منڈیوں کی تلاش میں معاون ثابت ہوگی۔فرینکفرٹ میں جاری نمائش میں پاکستان سے _ 231کمپنیوں نے شرکت کی ہے جبکہ ٹی ڈی اے پی نے بھی پویلین قائم کیا جہاں 56 پاکستانی کمپنیاں اپنی مصنوعات کی تشہیر کررہی ہیں۔

ایکسپورٹرز کا کہنا ہے کہ بدلتے ہوئے عالمی تجارتی ماحول میں پاکستانی مصنوعات کے لئے امکانات تیزی سے بٹھ رہے ہیں اور ہیم ٹیکسٹائل نمائش ان امکانات کو بروئے کار لانے کا ایک بہترین پلیٹ فارم ہے۔میسے فرینکفرٹ کے پاکستان میں کنٹری ہیڈ عمر صلاح الدین کا کہنا تھا کہ 50 ویں ہیم ٹیکسٹائل نمائش میں پاکستانی خریداروں کی توجہ کا مرکز بنی رہیں بالخصوص ماحول دوست طریقے سے مصنوعات تیار کرنے والی پاکستانی کمپنیوں کو بے حد سراہا گیا ہے جبکہ انڈس ویلی کی طالبات نے بھی اپنے نت نئے ڈیزائن دنیا سے آئے ہوئے خریداروں کے سامنے پیش کئے ہیں۔پاکستانی ایکسپورٹرز شائق جاوید،سلطان وقار،حمزہ شکیل، احسن ایوب، ایم حنیف توکل،عرفان یوسف نے نئی بات سے گفتگو میں بتایا کہ امریکا اب پاکستان اور بنگلہ دیش کا رخ کررہا ہے اور مستقبل میں پاکستانی ہوم ٹیکسٹاِل مصنوعات اہم مارکیٹوں میں جگہ بنالیں گی۔انہوں نے کہا کہ ہوم ٹیکسٹائل پاکستانی ہوم ٹیکسٹائل انڈسٹری کو آکسیجن فراہم کررہی ہے۔علاوہ ازیں گزشتہ روز میسے فرینکفرٹ کی اہم ترین ممبر مس میکی نے میسے فرینکفرٹ کے پاکستان میں کنٹری ہیڈ عمر صلاح الدین کے ہمراہ میڈیا سے ملاقات کی۔اس موقع پرعمر صلاح الدین نے مس میکی کو پاکستانی روایتی اجرک کا تحفہ پیش کیا۔

مزید : کامرس


loading...