13سے 17جنوری 8اضلاع میں انسداد پو لیو مہم شروع کرنے کا فیصلہ

13سے 17جنوری 8اضلاع میں انسداد پو لیو مہم شروع کرنے کا فیصلہ

  



پشاور(سٹاف رپورٹر)خیبرپختونخوا کے وزیر صحت شہرام خان ترکئی کی زیر صدارت انسداد پولیو پروگرام کا اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس میں انسدادِ پولیو پروگرام کی موجودہ صورتحال اور آئندہ کی انسدادِ پولیو مہمات سے متعلق لائحہ عمل پر غور کیا گیا۔ اجلاس میں سیکرٹری صحت، کوآرڈینیٹر ای او سی کے پی، ڈائریکٹر ای پی آئی اور یونیسف ٹیم لیڈر نے بھی شرکت کی۔کوآرڈئینٹر ایمرجنسی آپریشنز سینٹر خیبرپختونخوا عبدالباسط نے اجلاس میں انسدادِ پولیو پروگرام کے حوالے سے بریفنگ دی۔ اجلاس میں بتایا گیا کہ سب سے زیادہ 31 پولیو کیسز ضلع لکی مروت میں رپورٹ ہوئے۔ سال 2018 میں پورے خیبر پختونخوا میں صرف 8 کیس رجسٹر ہوئے تھے جبکہ سال 2019 میں پولیو کیسز کی تعداد بڑھ کر 91 ہو گئی۔ اجلاس میں بتایا گیا کہ صوبہ کے 8 اضلاع جن میں ضلع بونیر، صوابی، نوشہرہ، چارسدہ، مہمند، مالاکنڈ، مردان اور ضلع سوات شامل ہیں میں انسداد پولیو مہم 13جنوری سے 17 جنوری تک چلائی جائے گی۔ اس موقع پر وزیر صحت شہرام خان ترکئی نے پولیو کے بڑھتے کیسزز پر تشویس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بچوں کے مستقبل کو ہر صورت محفوظ بنانا ہے اور اس کے لیے اپنی تمام تر توانائیاں صرف کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ وہ اسی ماہ شروع ہونے والی انسدادِ پولیو مہم کی خود نگرانی کریں گے جبکہ مجموعی طور پر پولیو مانیٹرنگ کو بھی بہتر کیا جائے گا۔ اجلاس میں پولیو کے خاتمے کے لیے اساتذہ اور علمائے کرائم کی بھرپور مدد لینے کا فیصلہ بھی کیا گیا۔ اسی طرح سکول کے بچوں کو پولیو کے نقصانات سے آگاہ کیا جائے اور علمائے کرام کے پولیو پلانے کے حوالے سے پیغامات کو بھی عام کیا جائے۔ شہرام خان ترکئی نے اس عزم کا اظہار کیا کہ پولیو کے خاتمے کے لیے سیاسی رہنما بھی اپنے حلقے میں بھرپور تعاون کریں گے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر