یوتھ پیس آر گنا ئز یشن کا قبائلی اضلاع میں غیر مقامی افراد کی بھرتی کیخلاف مظاہرہ

یوتھ پیس آر گنا ئز یشن کا قبائلی اضلاع میں غیر مقامی افراد کی بھرتی کیخلاف ...

  



پشاور(سٹی رپورٹر) قبائلی اضلاع میں سفیر بلدیات پروگرام مین غیر مقامی افراد بھرتی کرنے کے خلاف یوتھ پیس ارگنائزیشن نے پشاور پریس کلب کے باہر احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ فاٹا مرجر روزگار اور ملازمتوں اور اسانیوں کیلئے کیا گیا تھا نہ انکے حقوق پر قبضہ کرنے کیلئے، یوتھ پیس ارگنائزیشنکے زیر اہتمام احتجاجی مظاہرے مین باجور سے وزیرستان تک قبائلی اضلاع کے نوجوانوں اور مشرانوں نے شرکت کی، نجیب اللہ بیٹنی نے،ظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کہ یو این ڈی پی فنڈڈ پروگرام سفیر بلدیات جو حالیہ قبائلی اضلاع میں شروع کیا گیا ہے اس پروگرام کے تحت قبائلی عوام کو بلدیاتی نظام اور انتخابت کے حوالے سے اگاہی دینگے لیکن بدقسمتی سے سفیر بلدیات پروگرام میں باجور سے لیکر وزیرستان تک 120افراد میں پچاس فیصد غیر مقامی افراد کو بھرتی کیا ہے جو کہ قبائلی تعلیم یافتہ نوجوانوں کے ساتھ ظلم ہیں انہوں نے بتایا کہ وزیراعظم عمران خان سے لیکر وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا اور دیگر وزرا بار بار کہہ چکے ہیں کہ قبائلی اضلاع میں خالی اسامیوں اور دیگر نوکریوں پر صرف قبائلی افراد کو بھرتی کرینگے تاکہ انکو روزگار ملے لیکن بدقسمتی سے ایک بار پھر انکے حقوق پر ڈاکہ ڈال کر غیر مقامی افراد جس مین ڈسٹرکٹ کوارڈی نیٹر اور سفیر بلدیات شامل ہیں جس مین خواتین کو بھی بھرتی کیا گیا ہے، عامر افریدی نے بتایا کہ قبائلی اضلاع میں ہزاروں کی تعداد میں ماسٹر سے پی ایچ ڈی ڈگری ہولڈر مرد اور خواتین موجود ہین لیکن ان کو نظر انداز کرکے چارسدہ، مردان،صوابی، بنوں اور ڈی آئی خان کے مرد اور خواتین کو قبائلی اضلاع میں بھرتی کیا ہے جو نہ صرف انکو علاقوں کا پتہ ہیں بلکہ علاقائی رسم و رواج سے بھی بے خبر ہیں، مظاہرے سے ٹراءؓل یوتھ موومنٹ کے صدر خیال زمان نے خظاب کرتے ہوئے کہا کہ محکمہ بلدیات کہتے ہیں کہ قبائلی اضلاع میں مطلوبہ اہلیت کے لوگ نہیں تھے جبکہ وہ انہیں چیلنج کرتے ہیں کہ ماسٹر،ایم فل اور پی ایچ ڈی ڈگری ہولڈر ہزاروں کی تعداد میں بے روزگار ہیں انہوں نے دھمکی دی کہ اگر اس پروگرام میں مقامی افراد کو نہیں لیا اور غیر مقامی افراد کو کو نہیں نکالا تو عدالت میں انکے خلاف کیس ائر کرینگے جبکہ تمام قبائلی اضلاع میں اس پروگرام کا بایکاٹ کرکے مزاحمت کرینگے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...