قبضہ کیس: سپیشل جوڈیشل مجسٹریٹ کا حکم معطل سٹیٹس کو برقرار رکھنے کا حکم‘ فریقین عدالت طلب

  قبضہ کیس: سپیشل جوڈیشل مجسٹریٹ کا حکم معطل سٹیٹس کو برقرار رکھنے کا حکم‘ ...

  



ملتان ( خبر نگار خصو صی) ہائیکورٹ ملتان بنچ کے جج جسٹس صادق محمود خرم نے دکان کے قبضہ کا سپیشل جوڈیشل مجسٹریٹ کا حکم معطل کرتے ہوئے سٹیٹس کو (status Quo) جاری کردیا ہے اور فریقین کو 31 جنوری کیلئے عدالت میں طلب(بقیہ نمبر17صفحہ12پر)

کر لیا ہے۔قبل ازیں فاضل عدالت میں مہران علی نے بذریعہ معظم خان درخواست دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا تھا کہ اس نے دو سال قبل خان پلازہ میں ایک دکان خریدی جس کی ڈیڈ موجود ہے جبکہ ملتان کا ایک وکیل عثمان یاسر زبردستی اس کی دکان پر قبضہ کرنے کی کوشش کررہا تھا تو بذریعہ فون تھانہ کینٹ کو اطلاع دی گئی جس نے موقع کی مناسبت سے 107 اور 151 کی کارروائی کی اور ایس ایچ او نے قلندرے بناکر اسپیشل جوڈیشل مجسٹریٹ کی عدالت کو بھجوا دیا جس پر دو ماہ تک کارروائی جاری رہی اس دوران عثمان یاسر نے پٹیشنر اور اس کے وکلاء کو بھی دھمکیاں دیں تاہم جوڈیشل مجسٹریٹ نے 2 جنوری کو فیصلہ کرتے ہوئے ضابطہ فوجداری کی دفعہ 145 کے تحت قلندرا ختم کر دیا اور دکان کو سربمہر کرنے کی درخواست بھی مسترد کردی اور ایس ایچ او تھانہ کینٹ کو ہدایت کی کہ ان کا قبضہ عثمان یاسر کو دلوائیں۔ جس پر ہائیکورٹ میں اس فیصلے کو چیلنج کرنا پڑا ہے۔ کیونکہ عثمان یاسر کو اس دوکان کا قبضہ دلوانا سراسر ناانصافی اور خلاف قانون ہے کیونکہ وہ اس دوکان کا مالک نہیں اور نہ ہی قابض اور یہ ناجائز طور پر یہ دوکان ہتھیانا چاہتا ہے۔

طلب /قبضہ

مزید : ملتان صفحہ آخر