جعلسازی مقدمہ‘ ملزم کی عبوری ضمانت 23جنوری تک منظور، پولیس ریکارڈ طلب

      جعلسازی مقدمہ‘ ملزم کی عبوری ضمانت 23جنوری تک منظور، پولیس ریکارڈ طلب

  



ملتان ( خبر نگار خصو صی) ہائیکورٹ ملتان بنچ کے جج جسٹس محمد وحید خان نے جعل سازی کے مقدمہ میں ملوث ملزم کی عبوری ضمانت 23جنوری تک منظور کرتے ہوئے پولیس سے ریکارڈ طلب کرلیا ہے۔ قبل ازیں فاضل عدالت میں ملزم محمد(بقیہ نمبر23صفحہ12پر)

فاروق نے کونسل ملک محمد نعیم اقبال اور ملک جاوید چنڑ کے توسط سے درخواست دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا تھا کہ اس کے خلاف کہروڑپکا کے مبینہ سودخور نے پولیس کی ملی بھگت سے جعلسازی کا مقدمہ درج کرایا جبکہ اس نے کوئی چیک جاری ہی نہیں کیا اور نہ ہی اس کا فنکا مائیکرو فنانس بینک میں اکاؤنٹ ہے۔مبینہ سود خور نے اس کے بھائی کو بھی تشدد کا نشانہ بنایا جس کا مقدمہ بھی درج ہوا لیکن پولیس انہیں گرفتار نہیں کررہی۔ مزید موقف اختیار کیا کہ محمد عامر نامی مبینہ سودخور تھانہ سٹی کہروڑپکا میں 18 نومبر کو ایف آئی آر درج کرائی تھی جس میں پٹیشنر نے سیشن کورٹ میں بھی عبوری ضمانت کی درخواست دائر کی لیکن وہ خارج ہوگئی تھی اس لیے فاضل عدالت عالیہ سے رجوع کرنا پڑا ہے انہوں نے مزید دلائل دیئے کہ ان کے خلاف فراڈ کا فرضی مقدمہ درج کیا گیا ہے جبکہ چیک باؤنس ہونے پر جو دفعہ لگتی ہیں وہ مقدمہ میں شامل نہیں اور نہ ہی اس کا اس مزکورہ بینک میں کوئی اکاؤنٹ ہے۔فاضل عدالت نے ضمانت منظور کرتے ہوئے فریقین و پولیس کو نوٹس جاری کرتے ہوئے مقدمہ کا ریکارڈ طلب کرلیا ہے۔

طلب

مزید : ملتان صفحہ آخر