رواں مالی سا ل کے پہلے 5ماہ میں حکومت نے 344ارب روپے کا نیا قرض لیا 

 رواں مالی سا ل کے پہلے 5ماہ میں حکومت نے 344ارب روپے کا نیا قرض لیا 

  



کراچی (سٹاف رپورٹر، نیوز ایجنسیاں)رواں مالی سال کے پہلے 5 ماہ میں حکومت نے 344 ارب روپے کا نیا قرض لیا۔ سٹیٹ بینک کے مطابق کل قرضے 32 ہزار 130 ارب روپے تک پہنچ گئے۔کشکول توڑنے کے دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے، حکومت ایک قرض اتارنے کے چکر میں دوسرا قرض لے رہی ہے، سٹیٹ بینک کے مطابق جولائی سے نومبر 2019 کے دوران قرضوں میں 344 ارب روپے کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا جس کے بعد حکومتی قرضے 32 ہزار 130 ارب روپے تک پہنچ گئے جبکہ نومبر 2018 میں حکومتی قرضے 26 ہزار 452 ارب روپے تھے۔اس طرح نومبر 2018 سے نومبر 2019 کے درمیان قرضوں میں 5 ہزر 678 ارب روپے کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔دوسری طرف مرکزی بینک کے اعدادو شمار کے مطابق تاریخ میں پہلی بار حکومتی بانڈز میں غیر ملکی سرمایہ کاری ایک ارب 60 کروڑ ڈالر تک پہنچ گئی۔ مرکزی بینک کے مطابق رواں مالی سال میں اب تک ٹی بلز اور پاکستان انویسمنٹ بانڈز میں سرمایہ کاری ایک ارب 60 کروڑ ڈالر تک پہنچ چکی ہے۔ اس عرصے میں امریکہ سے 73 کروڑ ڈالر، برطانیہ سے 80 کروڑ ڈالر اور عرب امارات سے 7 کروڑ ڈالر کی حکومتی بانڈز میں سرمایہ کاری ہوئی۔معاشی تجزیہ کاروں کے مطابق آئی ایم ایف، ورلڈ بینک، ایشیائی ترقیاتی بینک اور دیگر کا پاکستان کی معیشت پر اعتماد بڑھا ہے، اس کے علاوہ زائد شرح سود کے باعث بھی بیرونی سرمایہ کار حکومتی بانڈز میں سرمایہ کاری کر رہے ہیں۔

حکومت قرضے

مزید : صفحہ اول


loading...