گڈز ٹرانسپورٹرز نے رقص کے ذریعے انوکھا احتجاج شروع کر دیا

گڈز ٹرانسپورٹرز نے رقص کے ذریعے انوکھا احتجاج شروع کر دیا

  



کراچی (اسٹاف رپورٹر) گڈز ٹرانسپورٹرز نے رقص کے ذریعے انوکھا احتجاج شروع کر دیا ہے۔تفصیلات کے مطابق گڈز ٹرانسپورٹرز کی ہڑتال پانچویں روز میں داخل ہو گئی ہے، ہڑتال ختم کرانے کے لیے تا حال وفاقی سطح پر احتجاج کرنے والے ٹرانسپورٹرز سے رابطہ نہیں کیا گیا۔کراچی میں گڈز ٹرانسپورٹرز نے اڈے پر احتجاجی رقص شروع کر دیا ہے، ٹرانسپورٹرز رقص کے ذریعے اپنا پیغام حکومت تک پہنچانے کی کوشش کرنے لگے ہیں، ترجمان گڈز ٹرانسپورٹ کا کہنا ہے کہ 5 دن ہو گئے کسی حکومتی نمایندے نے رابطہ نہیں کیا۔گڈز ٹرانسپورٹرزنے نماز جمعہ کے بعد کاٹھور کے مقام پر ایم 9 موٹر وے پر علامتی دھرنا دے کر احتجاج ریکارڈکرایا، کراچی پورٹ اور قاسم پورٹ پر کارگو ہینڈلنگ کی سرگرمیاں ماند پڑ چکی ہیں، مقامی اور ملکی صنعتوں کی تیار کردہ برآمدی مصنوعات کی پورٹ تک ترسیلات بھی روک دی گئیں۔ترجمان امداد حسین نقوی نے کہا کہ مطالبات کی منظوری تک احتجاج جاری رہے گا، ہڑتال ملک بھر میں جاری ہے، بندرگاہوں، کارخانوں اور ٹرک اڈوں سے مال کی ترسیل مکمل طور ہر بند ہو گئی ہے، ملک کے مختلف شہروں میں مال سے لوڈ گاڑیاں، ٹرک اڈوں اور شاہراہوں پر پانچ دن سے کھڑی ہیں۔یاد رہے کہ ٹرانسپورٹرز نے کہا تھا کہ جمعے تک ایکسل لوڈ لمٹ کا نفاذ، ڈرائیونگ لائسنس اور جرمانوں کے میکنزم میں تبدیلی کے ساتھ ساتھ تمام مطالبات نہ مانے گئے تو پھر آئل ٹینکر ٹرانسپورٹرز بھی ہڑتال میں شریک ہو جائیں گے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر