اربوں کے غیرقانونی ٹھیکے، کیس کی سماعت6 فروری تک ملتوی

اربوں کے غیرقانونی ٹھیکے، کیس کی سماعت6 فروری تک ملتوی

  



 لاہور(نامہ نگار)احتساب عدالت کے جج امیرمحمد خان ے چنیوٹ اور راجوہ میں اربوں روپے مالیت کے غیر قانونی ٹھیکے دینے سے متعلق کیس کی سماعت6فروری تک ملتوی کردی ہے۔عدالت نے 5ملزموں کو آئندہ سماعت پر دوبارہ عدالت میں پیش کرنے کاحکم دیاہے۔واضح رہے کہ عدالت نے سابق صوبائی وزیرسبطین خان کو ریفرنس آنے تک حاضری سے استثنی دے رکھا ہے،شریک ملزمان میں امتیاز احمد چیمہ، محمد اسلم،عبدالستار،سابق فیڈرل سیکرٹری سلمان غنی اور لیگل ایڈوائز محمد شاہد شامل ہیں،سبطین خان سمیت تمام ملزمان کی ضمانت عدالت عالیہ سے منظور کی جاچکی ہے،نیب کا موقف ہے کہ ملزمان نے ملی بھگت سے اربوں روپے مالیت کے چنیوٹ میں خام لوہے کی کان کنی کا ٹھیکہ مبینہ من پسند اور معمولی نوعیت کی کمپنی کو دیا، ملزمان پر اربوں روپے مالیت چنیوٹ آئرن اور کان کنی کا ٹھیکہ میں من پسند کمپنی کو نوازنے کا الزام عائد ہے۔ملزمان کی دیگر شریک ملزمان کی ملی بھگت سے ٹھیکہ ای آر پی ایل کو مروجہ قوانین سے انحراف کرتے ہوئے فراہم کیا گیا، ای آر پی ایل نامی کمپنی ماضی میں کان کنی کے تجربہ کی حامل نہ تھی پھر بھی ملزم نے ملی بھگت سے اسے کنٹریکٹ فراہم کیا۔

غیرقانونی ٹھیکے

مزید : علاقائی


loading...