مبینہ طورپر اسرائیل کی بھی ایران کے حامیوں پر بمباری؟ جانی نقصان ہوگیا، نیا خطرہ

مبینہ طورپر اسرائیل کی بھی ایران کے حامیوں پر بمباری؟ جانی نقصان ہوگیا، نیا ...
مبینہ طورپر اسرائیل کی بھی ایران کے حامیوں پر بمباری؟ جانی نقصان ہوگیا، نیا خطرہ

  



بیروت(ڈیلی پاکستان آن لائن)شام میں مبینہ طور پر اسرائیلی طیارے کی ایران کی حامی ملیشیا کی  تنصیبات پر بمباری کے نتیجے میں 8 اہلکار، 4 شہری اور 2 عراقی حکام سمیت چودہ افراد جاں بحق ہوگئے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق شام میں عراقی سرحد کے نزدیک ایک طیارے نے بمباری کی جس میں ایران کے حامی عراقی ملیشیا کے اسلحہ ڈپو کو نشانہ بنایا گیا جو عراق اور ایران کے حمایت یافتہ جنگجو گروپس کے زیر استعمال تھا۔

بمباری میں 8 فوجی اہلکار،شام میں کام کرنے والے 4 سماجی کارکنان اور 2 عراقی حکام کے ہلاک ہونے کی اطلاعات ہیں جبکہ 3 فوجی اہلکار شدید زخمی ہیں۔ ہلاک اور زخمی ہونے ہونے والوں کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی ہے جبکہ اسلحہ ڈپو مکمل طور پر تباہ ہوگئے۔

نیویارک ٹائمر کے مطابق عراق کے ایک اعلیٰ سکیورٹی افسر اور پی یو ایف ملیشیا سے تعلق رکھنے والے ایک عہدیدار نے بتا یا ہے کہ طیاروں نے ان دوگاڑیوں کو نشانہ بنایا جن پر میزائل لدے ہوئے تھے۔انہوں نے کہا حملہ یقینی طور پر اسرائیلی جنگی جہازوں سے ہی کیاگیاہے۔نیویارک ٹائمز کے مطابق اسرائیل نے اس خبر کی تصدیق یا تردید نہیں کی ہے۔

ادھر شام میں سیرین آبزرویٹری کا کہنا ہے کہ حملہ ایران کی حمایت یافتہ ملیشیا کی تنصیبات پر کیا گیا ہے جب کہ جنگ زدہ شام میں صورت حال پر نظر رکھنے والے ایک برطانوی ادارے کے مطابق بمباری اسلحہ ڈپوز پر کی گئی۔دوسری جانب عراقی حکام نے دعویٰ کیا ہے کہ مبینہ طور پر اسرائیلی طیارے نے اسلحے اور میزائل سے لدے دو ٹرکوں کو نشانہ بنایا ہے، تاہم اسرائیل کی جانب سے تردید یا تائید نہیں کی گئی ہے۔اسرائیل اس سے قبل بھی ایسے کئی حملے کرچکا ہے۔

مزید : بین الاقوامی /عرب دنیا


loading...