انسانی غلطی سے مسافر طیارہ مار گرائے جانے کے اعتراف کے بعد ایرانی صدر حسن روحانی کا موقف بھی آگیا، شاندار اعلان کردیا

انسانی غلطی سے مسافر طیارہ مار گرائے جانے کے اعتراف کے بعد ایرانی صدر حسن ...
انسانی غلطی سے مسافر طیارہ مار گرائے جانے کے اعتراف کے بعد ایرانی صدر حسن روحانی کا موقف بھی آگیا، شاندار اعلان کردیا

  



تہران (ویب ڈیسک)انسانی غلطی کی وجہ سے مسافر طیارے کی تباہی کے اعتراف کے بعد  ایرانی صدر حسن روحانی نے کہا ہے کہ ایران کو اس المناک غلطی پر گہرا افسوس ہے، ناقابل معافی واقعے کے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

سوشل میڈیا پر اپنے ایک بیان میں حسن روحانی نے کہا کہ مسلح افواج اندرونی تحقیقات کے بعد اس نتیجے پر پہنچیں کہ میزائل انسانی غلطی کی وجہ سے فائر ہوا جس کے نتیجے میں یوکرائنی طیارہ تباہ ہوا، اور 176 معصوم لوگ مارے گئے ۔ انہوں نے مزید لکھا کہ اس بڑے صدمے اور ناقابل معافی غلطی کے ذمہ داران کا تعین کرنے اور سزا دینے کے لیے تفتیش جاری ہے "۔

ایک اور ٹوئیٹ میں انہوں نے لکھا کہ اسلامک ریپبلک آف ایران کو اس تباہ کن غلطی پر شدید افسوس ہے ، ہماری تمام ہمدردیاں متاثرہ خاندانوں کے ساتھ ہیں اور میں ان کے ساتھ تعزیت کرتاہوں۔ 

اس سے قبل ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا حادثہ افسوس ناک ہے، متاثرہ خاندانوں سے معذرت چاہتے ہیں، طاقت کے گھمنڈ میں مبتلا مہم جو امریکا پر ذمہ داری عائد ہوتی ہے۔واضح رہے ایران نے یوکرین کے مسافر طیارے حادثے کو انسانی غلطی قرار دے دیا۔ ایران نے اعتراف کیا ہے کہ یوکرین کا مسافر طیارہ غلطی سے حملے کا نشانہ بنا۔

خیال رہے ایران کی جانب سے عراق میں امریکی فوجی اڈوں پر میزائل حملے ختم ہونے کے کچھ گھنٹے بعد یوکرین کا طیارہ ایران کے امام خمینی ائیرپورٹ کے قریب گر کر تباہ ہوگیا جس میں 176 افراد ہلاک ہوگئے تھے، مسافر طیارہ تہران سے یوکرین کے دارالحکومت کیف جا رہا تھا، طیارے میں 82 ایرانی اور 63 کینیڈین شہری سوار تھے۔

مزید : اہم خبریں /بین الاقوامی


loading...