’’اگر کارکردگی کی بنیاد پر اداروں کا خاتمہ کرنا ہے تو پھر سب سے پہلے۔۔۔‘‘علامہ طاہر اشرفی نے فواد چوہدری کو کھری کھری سنا دیں

’’اگر کارکردگی کی بنیاد پر اداروں کا خاتمہ کرنا ہے تو پھر سب سے ...
’’اگر کارکردگی کی بنیاد پر اداروں کا خاتمہ کرنا ہے تو پھر سب سے پہلے۔۔۔‘‘علامہ طاہر اشرفی نے فواد چوہدری کو کھری کھری سنا دیں

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان علماء کونسل کے سربراہ اور وفاق المساجد پاکستان کے چیئرمین علامہ حافظ طاہر محمود اشرفی نے کہا ہے کہ اگر کارکردگی کی بنیاد پر اداروں کا خاتمہ کرنا ہےتوپھرسب سےپہلےپارلیمان کانمبرآئےگا،اسلامی نظریاتی کونسل کےخاتمے کی باتیں غیرسنجیدہ ہیں،اسلامی  نظریاتی کونسل کی  مخالفت کی بجائےاسے مزید موثر بنانے کی ضرورت ہے۔

تفصیلات کےمطابق متحدہ علماءبورڈ پنجاب کےچیئرمین علامہ طاہر محمود اشرفی نے وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری کی جانب سے اسلامی نظریاتی کونسل کے خاتمے کے حوالے سے بیان کی مخالفت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسلامی نظریاتی کونسل کے خاتمے کی باتیں کرنے والے جان لیں کہ اس ادارے کی کارکردگی پارلیمان سے بہتر ہے،اگر کارکردگی کی بنیاد پر اداروں کا خاتمہ کرنا ہے تو پھر سب سے پہلے پارلیمان کا نمبر آئے گا ۔اُنہوں نے کہا کہ اسلامی نظریاتی کونسل کی سفارشات  کو قانونی شکل دینی چاہئے ،اداروں کو ختم کرنے کی بجائے ان میں بہتری لانے کی کوشش کریں تاہم علامہ طاہر محمود اشرفی نے اس بات کا اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ حقیقت یہی ہے کہ اسلامی نظریاتی کونسل بعض اوقات سیاسی رشوت کے طور پر استعمال ہوتی ہے۔اُنہوں نے کہا کہ اسلامی نظریاتی کونسل کے خاتمے کی باتیں غیر سنجیدہ ہیں ،اسلامی  نظریاتی کونسل کی  مخالفت کی بجائے اسے مزید موثر بنانے کی ضرورت ہے۔

واضح رہےکہ دو روزقبل وفاقی وزیرفواد چوہدری نے  اپنی توپوں کا رخ اسلامی نظریاتی کونسل کی جانب موڑتےہوئےکہاتھاکہ اسلامی نظریاتی کونسل کی کارکردگی پرسنجیدہ سوالات ہیں،اسلامی نظریاتی کونسل  جیسےادارے پرکروڑوں روپے خرچ کرنا سمجھ سے بالاتر ہے، آج تک مذہبی طبقات کی سوچ کو نظریاتی کونسل سے کوئی رہنمائی نہیں ملی،ایسے ادارے پر کروڑوں روپے خرچ کرنے کا جواز میری سمجھ سے بالاتر ہے،اسلامی نظریاتی کونسل کی تشکیل نو کی ضرورت ہے، جدید تقاضوں سے ہم آہنگ، انتہائی جید لوگ اس ادارے کو سنبھالیں۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد


loading...