الطاف حسین کے گھروں سے لاکھوں پاﺅنڈ ملے :بی بی سی

الطاف حسین کے گھروں سے لاکھوں پاﺅنڈ ملے :بی بی سی
الطاف حسین کے گھروں سے لاکھوں پاﺅنڈ ملے :بی بی سی

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) برطانوی نشریاتی ادارے نے دعویٰ کیا ہے کہ متحدہ کے دفتر اور الطاف حسین کے گھر پر دو چھاپوں میں چار لاکھ پاﺅنڈ ملے ہیں۔ برطانوی نشریاتی ادارے کے پروگرام میں فاروق ستار نے اعتراف کیا ہے کہ لندن پولیس نے کچھ رقم ضبط کی ہے ، بالکل درست اعداد و شمار معلوم نہیں۔انہوں نے کہا کہ متحدہ قومی موومنٹ منی لانڈرنگ میں ملوث نہیں،برطانی نشریاتی ادارے کی دستاویزی فلم انتہا پسند اور طالبان نواز عناصر کے زیر اثر ہے۔ مخالفین کے لیے الطاف حسین کی دھمکی آمیز تقاریر فاروق ستار کو دکھائی گئیں۔ان کا کہنا تھا کہ الطاف حسین مذاق کررہے تھے ان کی دھمکیوں کا مقصد کچھ نہیں تھا۔ فاروق ستار نے برطانوی نشریاتی ادارے کے پروگرام میں کہا کہ پاکستا ن میں تشدد کو ہوا دینے کے لئے لندن سے کبھی دھمکیاں جاری نہیں کی گئیں۔ میٹرو پولیٹن پولیس نے متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین کے گھر اور دفتر سے 6 کروڑ روپے کے مساوی رقم ملنے کے بعد منی لانڈرنگ اور تشدد پر اکسانے کے الزامات کی تحقیقات شروع کردی ہیں۔برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کے مطابق اسکاٹ لینڈ یارڈ کے انسداد دہشت گردی یونٹ نے ڈاکٹر عمران فاروق کے قتل کی تحقیقات کے سلسلے میں 6 دسمبر 2012 ءاور 18 جون 2013 ءکو ان کے دفتر اور رہائش گاہ پر چھاپے مارے ، تلاشی کے دوران دونوں جگہوں سے رقم برآمد ہوئی جس کی کوئی تفصیل یا وضاحت پیش نہیں کی گئی جس کے بعد پولیس نے منی لانڈرنگ کی تحقیقات بھی شروع کردی ہیں، اس کے علاوہ ڈاکٹر عمران فاروق اور لوگوں کو تشدد پر اکسانے کے الزامات بھی زیر تفتیش ہیں۔برطانوی نشریاتی ادارے کے پروگرام سے بات کرتے ہوئےقومی اسمبلی میں ایم کیو ایم کے پارلیمانی لیڈر ڈاکٹر فاروق ستار نے پولیس کے چھاپے کے دوران رقم ملنے کی تصدیق کی ہے تاہم انہوں نے یہ بات ماننے سے انکارکیا کہ یہ رقم کسی غیرقانونی طریقے سےلائی گئی۔دوسری جانب بی بی سی ہی کے پروگرام نیوز نائٹ میں 2001 میں الطاف حسین کی جانب سے اس وقت کے وزیر اعظم ٹونی بلیئر کو لکھے گئے خط کی بھی تصدیق کی گئی ہے جس میں انہوں نے پاکستان میں عسکریت پسندوں کی نشاندہی کے لئے اپنے تعاون کی پیشکش کی تھی۔

مزید :

قومی -