چین میں امریکی کمپنی ’گلیکسو‘سے رشوت لینے کا اعتراف

چین میں امریکی کمپنی ’گلیکسو‘سے رشوت لینے کا اعتراف
چین میں امریکی کمپنی ’گلیکسو‘سے رشوت لینے کا اعتراف

  

بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک)برطانوی دواساز کمپنی گلیکسو سمتھ کلائن کے سینئر مینجرز نے چین میں حکام کو رشوت دینے کے جرم کا اعتراف کر لیا۔چین کے حکام کا کہنا ہے کہ گلیکسو سمتھ کلائن کے سینئر افسران نے حکومتی افسران، فارموسیوٹیکل سیکٹر کے مختلف گروپس، ہسپتالوں اور ڈاکٹروں کو ناجائز فائدے حاصل کرنے کے لئے رشوتیں دی ہیں۔ حکام کا کہنا تھا کہ دواساز کمپنی کے افسران اپنی کمپنی کے پراڈکٹس بیچنے اور پیسے بڑھانے کے لئے رشوت دیتے رہے اور ایسا کرنے کے لئے انہوں نے ٹریول ایجنسیز اور دیگر ذرائع کا بھی سہارا لیا۔لیکسو اسمتھ کلائن کے ترجمان نے الزامات کے حوالے سے کہا ہے کہ انہیں کمپنی کے کسی بھی افسر کے خلاف رشوت دینے یا کرپشن میں ملوث ہونے کا کوئی ثبوت نہیں ملا البتہ ان کی کمپنی اس سلسلے میں چینی حکام کے ساتھ تعاون کرنے کے لئے تیار ہے۔

مزید :

بزنس -