نواز مودی ملاقات, پاکستانی ہائی کمشنر نے کشمیری رہنماؤں کا افطار ڈنر ملتوی کردیا

نواز مودی ملاقات, پاکستانی ہائی کمشنر نے کشمیری رہنماؤں کا افطار ڈنر ملتوی ...
نواز مودی ملاقات, پاکستانی ہائی کمشنر نے کشمیری رہنماؤں کا افطار ڈنر ملتوی کردیا

  

نئی دلی (مانیٹرنگ ڈیسک) کشمیری رہنماؤں کو دلی میں پاکستانی ہائی کمشنر کی طرف سے روایتی طور پر ہرسال افطار پارٹی دی جاتی رہی ہے لیکن مبینہ طور پر اس بار روس میں وزیراعظم نواز شریف اور بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے درمیان ملاقات کے پیش نظر یہ افطار ڈنر ملتوی کردیا گیا۔

جریدے ’’ڈیلی میل‘‘ نے کشمیری ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ پاکستانی ہائی کمشنر کی طرف سے کشمیری رہنماؤں کو 4 جولائی کے افطار ڈنر کیلئے دعوت دی گئی تھی، جس کا انعقاد پاکستانی سفارتخانے میں کیا جانا تھا۔ جریدے کے مطابق جن رہنماؤں کو دعوت دی گئی ان میں سید علی گیلانی، میر واعظ عمر فاروق، محمد یٰسین ملک اور شبیر احمد شاہ شامل ہیں۔ جریدے کا کہنا ہے کہ ایک سینئر کشمیری رہنما نے بتایا ہے کہ پاکستانی ہائی کمشنر کی طرف سے بتایا گیا کہ افطار ملاقات ملتوی کردی گئی ہے۔ انہوں نے خیال ظاہر کیا کہ نئی تاریخ کا اعلان روس میں پاک بھارت رہنماؤں کی ملاقات کے بعد کیا جائے گا۔ کشمیری رہنماؤں نے یہ خیال بھی ظاہر کیا ہے کہ دلی میں کشمیری رہنماؤں پر بہت زیادہ توجہ اور اس کے نتیجے میں پاک بھارت سربراہوں کی ملاقات پر ممکنہ منفی اثرات کے خدشے کے پیش نظر افطار ڈنر ملتوی کیا گیا۔

واضح رہے کہ گزشتہ سال پاکستان اور بھارت کے درمیان سیکرٹری لیول مذاکرات سے پہلے پاکستانی ہائی کمشنر نے کشمیری رہنماؤں سے ملاقات کی تھی جس پر احتجاج کرتے ہوئے بھارت نے مذاکرات سے انکار کردیا تھا۔ پاکستان کا موقف رہا ہے کہ پاک بھارت مذاکرات سے پہلے کشمیری رہنماؤں کے ساتھ ملاقات مذاکرات کو بامعنی بنانے کی کوشش کا حصہ ہے اور یہ روایت ایک عرصے سے جاری ہے۔

مزید : بین الاقوامی