وہ گاؤں جہاں کا ہر باسی اپنا ایک گردہ بیچ چکا ہے، یہ کام کیا ضرورت پوری کرنے کیلئے کیا اور پھر کونسی آفت ٹوٹ پڑی؟ دردناک کہانی جو ہر دل کو افسردہ کردے

وہ گاؤں جہاں کا ہر باسی اپنا ایک گردہ بیچ چکا ہے، یہ کام کیا ضرورت پوری کرنے ...
وہ گاؤں جہاں کا ہر باسی اپنا ایک گردہ بیچ چکا ہے، یہ کام کیا ضرورت پوری کرنے کیلئے کیا اور پھر کونسی آفت ٹوٹ پڑی؟ دردناک کہانی جو ہر دل کو افسردہ کردے

  

کٹھمنڈو (نیوز ڈیسک) نیپال کا گاؤن ہوکسے دنیا میں واحد ایسی جگہ ہے کہ جس کے غربت کے مارے باسیوں میں سے ہر ایک اپنا گردہ فروخت کرچکا ہے، لیکن ان بدقسمت لوگوں نے اپنے جسم کا ٹکڑا بیچ کر جو حاصل کیا وہ چند لمحوں میں صفحہ ہستی سے ملیا میٹ ہوگیا۔

ہوکسے گاؤں کے مرد تومرد، خواتین بھی اپنے گردے فروخت کرچکی ہیں۔ یہ لوگ ایک مدت سے گردے بیچ کر سر چھپانے کی جگہ خریدتے رہے ہیں اور جب سارا گاؤں اس کربناک عمل سے گزرچکا تو زلزلہ آگیا اور لمحوں میں ان کے گھر ملبے کے ڈھیر میں بدل گئے۔

اگلی مرتبہ آپ کے بچے کوئی فرمائش پوری نہ ہونے پر روئیں تو انہیں اس باہمت بچے کی یہ تصویر ضرور دکھا دیجئے گا،تفصیلات کیلئے یہاں کلک کریں۔

گاؤں کی ایک خاتون گیتا نے بتایا کہ اس نے پنا گردہ 1300 پونڈ (تقریباً 2 لاکھ پاکستانی روپے) میں فروخت کیا۔ گردہ نکالنے کیلئے اسے بھارت لے جایا گیا جہاں ایک خفیہ کلینک میں آپریشن کرکے اس کا ایک گردہ نکال لیا گیا۔ گیتا نے گردہ بیچ کر جو رقم حاصل کی ا س سے ایک گھر تعمیر کیا تاکہ اپنے چار بچوں کو چھت فراہم کرسکے، اور پھر شدید زلزلے نے نیپال کے بڑے حصے کو درہم برہم کردیا۔ گیتا کے گاؤں کا ہر گھر برباد ہوگیا اور اس کے باسی گردے بیچنے کے باوجود پھر سے بے گھر ہوگئے ہیں۔

مرد ایک دن میں کتنا وقت عورتوں کو گھورنے میں گزاردیتے ہیں؟ جدید تحقیق نے مردوں کو انتہائی شرمندہ کردیا،تفصیلات کیلئے یہاں کلک کریں۔

گاؤں والوں کا کہنا ہے کہ گزشتہ 10 سال کے دوران گردوں کا کاروبار کرنے والے گینگ کے لوگ ان کے گاؤں آکر لوگوں کو رقم کا لالچ دیتے رہے اور گھر تعمیر کرنے کا خواب آنکھوں میں سجائے تقریباً سب گاؤں والوں نے اپنے گردے بیچے۔ چار ننھے بچوں کے ساتھ ایک خستہ حال جھونپڑی میں مقیم گیتا کا کہنا ہے کہ اسے سہانے خواب دکھانے والوں نے ا س کا گردہ چھین لیا اور پھر زلزلے نے اس کا گھر بھی چھین لیا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس