کاروباری ہفتے کے آخری روز شدید کاروباری اتار چڑھاؤ کی زد میں رہی

کاروباری ہفتے کے آخری روز شدید کاروباری اتار چڑھاؤ کی زد میں رہی

کراچی(اکنامک رپورٹر)کراچی اسٹاک مارکیٹ کاروباری ہفتے کے آخری روز شدید کاروباری اتار چڑھاؤ کی زد میں رہی جس کے بعد انڈیکس مزید کم ہو گیا تاہم کے ایس ای 100انڈیکس 35100پوائنٹس کی سطح پر برقرار رہا،مندی کے سبب اسٹاک مارکیٹ میں سرمایہ کاروں کے466کروڑ سے زائد روپے ڈوب گئے جبکہ کاروباری حجم بھی جمعرات کی نسبت 5کروڑ شیئرز کم رہا۔جمعہ کو کراچی اسٹاک مارکیٹ کاروبار کے آغاز سے ہی اتارچڑھاؤ کی زد میں رہی سرمایہ کاروں کی توانائی ،پیٹرولیم اور فرٹیلائزر سیکٹر میں سرمایہ کاری کے سبب ٹریڈنگ کے دوران کے ایس ای 100انڈیکس 35200اور 35300کی 2بالائی حدوں کو عبور کرتا ہوا 35371.16پوائنٹس کی بلند سطح پر جاپہنچا تاہم مقامی بروکریج ہاؤسز اور دیگر انسٹی ٹیوشن کی جانب سے حصص کے فروخت پر دباؤ کے سبب مارکیٹ مثبت زون سے منفی زون میں داخل ہوگئی اور انڈیکس ایک موقع پر35092.16پوائنٹس کی نچلی سطح تک گر گیا ۔

اسٹاک مارکیٹ کے ماہرین کے مطابق مارکیٹ میں مندی کا رجحان آئندہ دنوں میں برقرار رہتا نظر آ رہا ہے جس کی اہم وجہ گریس میں جاری مسائل ہیں ،چین کی مارکیٹ میں مندی کارجحان عالمی مارکیٹ پر اثر انداز ہو رہا ہے جس کے اثرات مقامی مارکیٹ پر بھی مرتب ہوتے دکھائی دے رہے ہیں غیر ملکی سرمایہ کارو ں کی جانب سے فروخت کا عمل بھی مارکیٹ کے لئے مشکلات کا سبب بن رہا ہے ۔عالمی مارکیٹ میں تیل کی گرتی قیمتوں سے مقامی تیل کمپنیوں کا نقصان کا اندیشہ ہے لیکن اس سے افراط زر میں کمی کے امکانات بھی نمایاں ہیں جس سے معاشی سطح پر سدھار آئیگا اور ساتھ ہی لیوریج سیکٹر کو بھی فائدہ ہو گا ۔بعض تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ مارکیٹ فی الحالکافی بڑھ چکی ہے اس وجہ سے اتار چڑھاؤ دیکھنے میں آ رہا ہے ۔عید کی طویل تعطیلات سے پہلے آخری ہفتے مارکیٹ میں سست روی کا رجحان دیکھا جا سکتا ہے ۔ جمعہ کو کاروبار کے اختتام پر کے ایس ای 100انڈیکس میں 34.84پوائنٹس کی کمی ریکارڈ کی گئی جس سے کے ایس ای 100انڈیکس35147.13پوائنٹس سے گھٹ کر35112.29پوائنٹس پر بند ہوا اسی طرح کے ایس ای آل شیئرز انڈیکس 24533.42پوائنٹس سے کم ہوکر24524.79پوائنٹس پر آگیا جبکہ کے ایس ای 30انڈیکس 28.91پوائنٹس کے اضافے سے 21959.46پوائنٹس پر جا پہنچا۔مندی کے سبب اسٹا ک مارکیٹ کے سرمائے میں4ارب 66کروڑ 29لاکھ67ہزار144روپے کی کمی واقع ہوئی جس سے مارکیٹ کا مجموعی سرمایہ 75کھرب79ارب 71کروڑ77لاکھ19ہزار978روپے سے کم ہوکر75کھرب75ارب5کروڑ47لاکھ52ہزار834روپے ہوگیا۔جمعہ کو اسٹاک مارکیٹ میں 31کروڑ 60لاکھ17ہزارحصص کے سودے ہوئے اور ٹریڈنگ ویلیو10ارب روپے تک محدود رہاجبکہ جمعرات کو36کروڑ 41لاکھ13ہزار حصص کا کاروبار ہوا اور ٹریڈ نگ ویلیو14ارب روپے ریکارڈ کیا گیا۔کراچی اسٹاک مارکیٹ میں جمعہ کے روز مجموعی طور پر 347کمپنیوں کا کاروبار ہوا جن میں سے 155کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں اضافہ ،179میں کمی اور 13کمپنیوں کے شیئرز کی قیمتوں میں استحکام رہا۔کاروبار کے لحاظ کے الیکٹرک2کروڑ11لاکھ،پیس پاک1کروڑ99لاکھ، ٹی پی ایل ٹریکر لمیٹڈ1کروڑ66لاکھ،بائیکو پیٹرولیم1کروڑ38لاکھ اور ٹی آر جی پاک1کروڑ37لاکھ حصص کے سودوں کے ساتھ سرفہرست رہے۔قیمتوں میں اتارچڑھاؤ کے اعتبار سے فیروز سنز کے بھاؤ میں22.65روپے اور جوبلی لائف انشورنس کے بھاؤمیں 21روپے کا اضافہ جبکہ سیمنس پاک کے بھاؤ میں 53.22روپے اور سروس انڈسٹریز کے بھاؤ میں43.06روپے کی نمایاں کمی ریکارڈ کی گئی

مزید : کامرس