جماعت اسلامی کی مسئلہ کشمیر پر دو ٹوک بات نہ کرنے پروزیر اعظم پر تنقید

جماعت اسلامی کی مسئلہ کشمیر پر دو ٹوک بات نہ کرنے پروزیر اعظم پر تنقید

لاہور(نمائندہ خصوصی)پارلیمانی لیڈرصوبائی اسمبلی وامیر جماعت اسلامی پنجاب ڈاکٹر سید وسیم اختراور سیکرٹری جنرل نذیراحمد جنجوعہ نے روس میں وزیراعظم نوازشریف کی بھارتی وزیراعظم نریندرمودی کے ساتھ ملاقات میں پاکستان کی طرف سے مسئلہ کشمیر اور دیگراہم ایشوزپر دوٹوک اندازمیں بات نہ کرنے پر اپنے شدید رد عمل کا اظہارکرتے ہوئے کہاہے کہ وزیراعظم نوازشریف کو بھارت سے مسئلہ کشمیر اور قبائلی علاقوں،کراچی اور بلوچستان میں ’’را‘‘ کی مداخلت پرواضح اندازمیں بات کرنی چاہئے تھی لیکن افسوس ناک امر یہ ہے کہ ایسانہیں کیاگیا۔انہوں نے کہاکہ پاکستان میں بھارتی مداخلت کے ٹھوس شواہدہمارے قانون نافذ کرنے والے اداروں کے پاس موجود ہیں۔نجانے کیوں وزیراعظم نوازشریف نے بھارتی وزیراعظم سے ان معاملات پر کھل کربات نہیں کی؟انہوں نے کہاکہ ایک طرف بھارت ممبئی حملے کاہمیشہ ڈھنڈوراپیٹتارہتا ہے جبکہ دوسری طرف ہمارامعاملہ ہے کہ ہم مسئلہ کشمیر اور پاکستان میں بھارتی مداخلت پر بات کرنے سے احتراز کرتے ہیں۔انہوں نے کہاکہ پاک بھارت وزرائے اعظم کی روس میں یہ ملاقات امریکہ کے دباؤپر ہوئی ہے۔یوں محسوس ہوتا ہے کہ عالمی دباؤپروزیراعظم نوازشریف نے بھارت سے اہم ترین بنیادی مسائل پر بات چیت نہیں کی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1