لاہورہائیکورٹ کا ڈیڑھ سالہ بچہ ماں کے حوالے کرنیکا حکم

لاہورہائیکورٹ کا ڈیڑھ سالہ بچہ ماں کے حوالے کرنیکا حکم

لاہور (نامہ نگار خصوصی ) لاہور ہائیکورٹ نے ڈیڑھ سالہ بچے کو ماں کے حوالے کرنے کا حکم دے دیا،عدالتی حکم پرماں کی طرف سے گود میں اٹھاتے ہی بچے نے کمرہ عدالت میں رو رو کر آسمان سر پر اٹھا لیا اور باپ کی طرف لپکتا رہا ،جسٹس مس عالیہ نیلم نے سلمی بی بی کی حبس بے جا کی درخواست پر سماعت شروع کی تو درخواست گزار خاتون کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ خاتون نے اپنے خاوند سے خلع کے لئے فیملی عدالت سے رجوع کر رکھا ہے تا ہم اس کا خاوند ڈیڑھ سالہ فہد کو سلمی بی بی سے زبردستی چھین کر ساتھ لے گیا ہے، عدالتی حکم پر تھانہ اروپ گوجرانوالہ پولیس نے بچے کو باپ کی تحویل سے بازیاب کروا کر عدالت میں پیش کیا ، خاتون کے شوہر نے عدالت کو بتایا کہ اس نے ڈیڑھ سالہ فہد کو زبردستی نہیں چھینا بلکہ خاتون سلمی بی بی خود بچے کو چھوڑ کر گئی ہے ، عدالت نے بچے کو ماں کے حوالے کرنے کا حکم دے دیا ، عدالتی حکم کے بعد جیسے ہی ماں نے بچے کو گود میں اٹھانا چاہا تو بچے نے رونا شروع کر دیا اور باپ کے پاس واپس جانے کی ضدکرتا رہا تا ہم بچے خاتون سلمی بی بی اپنے بھائی کے ہمراہ ڈیڑھ برس کے فہد کو لے کر احاطہ عدالت سے باہر چلی گئی۔

بچہ حوالے

مزید : صفحہ آخر