ملک سے 2018ء تک لوڈشیڈنگ کا ہمیشہ کیلئے خاتمہ ہو جائیگا،مجتبیٰ شجاع الرحمن

ملک سے 2018ء تک لوڈشیڈنگ کا ہمیشہ کیلئے خاتمہ ہو جائیگا،مجتبیٰ شجاع الرحمن

لاہور( خبرنگار) پنجاب کے وزیر ایکسائیز و ٹیکسیشن مجتبیٰ شجاع الرحمن نے کہا ہے کہ حکومت پنجاب 2018ء تک لوڈشیڈنگ اور توانائی بحران کا ہمیشہ کیلئے خاتمہ کر دے گی جس کیلئے سولر، کول اور ایل این جی پاور پراجیکٹس شروع کئے جا رہے ہیں جبکہ قائداعظم سولر پارک نے کام شروع کر دیا ہے اور آئندہ برس تک اس کی پیداوار 1000میگاواٹ ہوجائے گی۔ انہوں نے کہا کہ غربت کے خاتمے اور لوگوں کے معیار زندگی کو بہتر بنانے کیلئے پنجاب حکومت ہرسال 10لاکھ افراد کو ملازمت کے مواقع فراہم کرے گی اور 2018ء تک 20لاکھ گریجوایٹس ووکیشنل ٹریننگ فراہم کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب کی ایکسپورٹ کو ہر سال 15فیصد تک بڑھایا جائے گا جبکہ گروتھ ریٹ کو 8فیصد تک لے جایا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ میلینیم ڈویلپمنٹ اہداف کو 2018ء تک حاصل کر لیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ وفاقی بجٹ کے بعد کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ اقتصادی ترقی کیلئے امن و امان کی صورتحال بہتر ہونا بہت ضروری ہے اور دھرنا سیاست نے سرمایہ کاری کو بہت نقصان پہنچایا ہے۔مختلف وفود سے گفتگو کے دوران مجتبیٰ شجاع الرحمن نے کہاکہ پنجاب حکومت کا مشن کوالٹی آف لائف کو بہتر بنانا ہے اور پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کو فروغ دیا جا رہا ہے۔اس کے علاوہ مقامی صنعت کی ضرورت کے مطابق نوجوانوں کو ووکیشنل ٹریننگ فراہم کی جا رہی ہے تاکہ زیادہ سے زیادہ لوگوں کو روزگار مہیا ہوسکے۔ انہوں نے کہاکہ پنجاب حکومت 2کول پاورپراجیکٹس کے علاوہ 1200میگاواٹ ایل این جی پاور پراجیکٹس بھی لگا رہی ہے جبکہ چائنہ کی 46بلین ڈالر کی سرمایہ کاری میں سے 22بلین ڈالر انرجی پراجیکٹس کیلئے ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت ضرورت مند افراد کو آٹے، ٹرانسپورٹ، علاج معالجہ اور دوائیوں کی مد میں تقریباً 7بلین روپے کی سبسڈی بھی فراہم کر رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت سی این جی مالکان کو بھی ریلیف فراہم کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب کی زیادہ ترآبادی دیہات میں رہتی ہے لہٰذا زراعت اور لائیوسٹاک کے شعبہ کو فوکس کرکے پالیسیاں ترتیب دی جا رہی ہیں تاکہ زراعت کے شعبہ میں زیادہ سے زیادہ ترقی ہو۔

مجتبیٰ شجاع الرحمن

مزید : صفحہ آخر