امریکہ کے دو کروڑ پندرہ لاکھ سرکاری ملازمین کی حساس معلومات چوری ہوگئیں

امریکہ کے دو کروڑ پندرہ لاکھ سرکاری ملازمین کی حساس معلومات چوری ہوگئیں

واشنگٹن(اظہرزمان،بیوروچیف)امریکہ کا ’’آفس آف پرسانل مینجمنٹ (او پی ایم ) جو امریکہ کے موجودہ ریٹائر ڈ سرکاری ملازمین کا ریکارڈرکھتاہے اس وقت ایک بحران کا شکار ہوگیاہے۔ اس محکمے کی خاتون سربراہ کیتھرین آرکیولیٹا نے گزشتہ اعتراف کیا تھا کہ سوشل سکیورٹی نمبرز سمیت ملازمین کا چینی ہیکرز نے ریکارڈ چرالیا ہے جس کی تعداد بیالیس لاکھ ہے۔ تاہم آج یہ انکشاف ہوا ہے کہ موجودہ اور ریٹائرڈ سرکاری ملازمین اوران کے اہل خانہ جن کا ریکارڈ ہیک ہوا ہے ان کی اصل تعداد اس سے پانچ گنا یعنی دو کروڑ پندرہ لاکھ ہے۔ جونہی یہ خبر نشر ہوئی،کانگریس کے دونوں اطراف کے ارکان کی طرف سے پرزورمطالبہ شروع ہو گیا ہے کہ محکمے کی سربراہ اپنی ناہلی پر مستعفی ہو جائے۔ تاہم وائٹ ہاؤس نے فی الحال محکمے کی سربراہ پر اعتماد کا اظہار کیا ہے۔مبصرین کے مطابق چینی ہیکرز بظاہر پرائیویٹ اور غیر سرکاری ہیں لیکن وہ ان معلومات کا غلط استعمال کر سکتے ہیں اور تحقیقات کا مطالبہ کرتے ہوئے شبہ ظاہر کیا ہے کہ ہو سکتا ہے مالیاتی ڈیٹا حاصل کرکے انہوں نے پہلے ہی ان کے اکاؤنٹس سے رقم نکال لی ہو۔

مزید : صفحہ اول