روس اور چین قومی سلامتی کیلئے خطرہ ہیں، القاعدہ کو شکست دینے کیلئے پاکستان سے تعاون جاری رکھنا ہوگا: امریکی جنرل

روس اور چین قومی سلامتی کیلئے خطرہ ہیں، القاعدہ کو شکست دینے کیلئے پاکستان ...
روس اور چین قومی سلامتی کیلئے خطرہ ہیں، القاعدہ کو شکست دینے کیلئے پاکستان سے تعاون جاری رکھنا ہوگا: امریکی جنرل

  

واشنگٹن (آن لائن) امریکی جنرل جوزف ڈنفورڈ نے کہا ہے کہ القاعدہ کو شکست دینے کیلئے پاکستان سے تعاون جاری رکھنا ہوگا۔ یہ پاکستان کے استحکام اور افغانستان میں امن کے حصول کیلئے ضروری ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے کانگریس کو بریفنگ میں کیا۔ اس موقع پر انہوں نے دہشتگردی کے خلاف جنگ میں پاک فوج کے کردار اور آپریشن ضرب عضب کی تعریف بھی کی۔

امریکی میرین کور کمانڈنٹ جنرل جوزف ڈنفورڈ نے کانگریس کو بتایا کہ شدت پسندی کا خاتمہ پاکستان اور امریکا کے مشترکہ مفاد میں ہے۔ دونوں ملک القاعدہ کو شکست دینے کیلئے مشترکہ سٹریٹجک مفادات کے تحت کام کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ القاعدہ اور دیر دہشت گرد تنظیموں کے خلاف آپریشن میں پاکستان نے امریکا کو مدد فراہم کی ہے۔ جنرل جوزف ڈنفورڈ نے کہا کہ پاک فوج کی شمالی وزیرستان اور دیگر علاقوں میں کارروائیوں سے شدت پسند گروپوں کو نقصان پہنچا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے ساتھ پائیدار پارٹنر شپ امریکا کے مفاد میں ہے۔ امریکا کو پاکستانی فوج کے ساتھ کام جاری رکھنا ہوگا اور گراﺅنڈ لائنز آف کمیونیکیشنز کے حوالے سے بھی پاکستان کا تعاون قابل تعریف ہے۔

جنرل ڈنگورڈ نے ایک سوال کے جواب میں کہا وہ امریکہ کی قومی سلامتی کیلئے روس کو نمبر ایک اور چین کو نمبر دو خطرہ سمجھتے ہیں۔ انہوں نے یوکرائن کو ہتھیاروں کی فراہمی کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ ان کے بغیر وہ روسی جارحیت کے خلاف اپنا دفاع نہیں کرپائیں گے۔ واضح رہے کہ امریکی صدر باراک اوباما نے مئی میں مرین جنرل ڈنفورڈ کو جوائنٹ چیفس آف سٹاف کے چیئرمین کیلئے نامزد کیا تھا۔

مزید : بین الاقوامی