یوسف رضا گیلانی اوررانا آصف توصیف کو الیکشن لڑنے کی اجازت

یوسف رضا گیلانی اوررانا آصف توصیف کو الیکشن لڑنے کی اجازت

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر ) سپریم کورٹ نے سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کیخلاف درخواست مسترد کرتے ہوئے ،ان کو الیکشن لڑنے کی اجازت دے دی۔ منگل کو سپریم کورٹ میں سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کے کاغذات منظوری کے خلاف اپیل کی سماعت ہوئی۔ عدالت نے یوسف رضاگیلانی کے کاغذات مسترد کرنے کی اپیل مسترد کردی۔اپیل مخالف امیدوار نثار احمد نے دائر کی جنہوں نے موقف اختیار کیا کہ یوسف رضا گیلانی کی اہلیہ، والدہ اور ساس دو کمپنیوں کی ڈائریکٹر ہیں، اور سابق وزیراعظم نے ان کے قرض معاف کرائے تھے۔ چیف جسٹس کے استفسار پر درخواست گزار نے بتایا کہ فوزیہ گیلانی کے کمپنی میں 12 فیصد شیئرز ہیں۔ چیف جسٹس نے کہا کہ کیا بارہ فیصد شیئرز پر نااہلی ہوسکتی ہے؟۔درخواست گزار کے وکیل نے کہا کہ سپریم کورٹ قرض معافی کو غلط قرار دے چکی ہے۔ اس پر جسٹس اعجاز الاحسن بولے کہ عدالت نے اسٹیٹ بنک کے قرض معافی کو کہاں غلط قرار دیا ہے۔دلائل کی سماعت کے بعد سپریم کورٹ نے یوسف رضا گیلانی کیخلاف درخواست مسترد کرتے ہوئے انہیں الیکشن لڑنے کی اجازت دے دی۔جبکہ سپریم کورٹ نے قومی اسمبلی کے حلقے این اے 105فیصل آبادسے امیدوارراناآصف توصیف کو الیکشن لڑنے کی مشروط اجازت دے دی۔ منگل کو سپریم کورٹ میں این اے 105فیصل آبادسے امیدوارراناآصف توصیف کی نااہلی کیخلاف درخواست کی سماعت ہوئی۔جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ راناآصف توصیف نے اہلیہ کے اثاثے چھپائے،وکیل سردار لطیف کھوسہ نے کہا کہ راناآصف کی اہلیہ کیخلاف بینکنگ کورٹ کافیصلہ معطل ہوچکاہے،اس پر جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ کاغذات نامزدگی جمع کرانے کے بعدفیصلہ معطل ہوا۔سپریم کورٹ نے راناآصف توصیف کوالیکشن لڑنے کی اجازت دیتے ہوئے کہا ہے کہ کامیابی کی صورت میں نوٹیفکیشن عدالتی فیصلے سے مشروط ہوگا۔

الیکشن کی اجازت

مزید : صفحہ اول


loading...