کچے کے علاقے میں خطرناک ڈاکوؤں کے خلاف کامیاب آپریشن ، 12مزدور بحفاظت بازیاب

کچے کے علاقے میں خطرناک ڈاکوؤں کے خلاف کامیاب آپریشن ، 12مزدور بحفاظت بازیاب

لاہور (کرائم رپورٹر) انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب ڈاکٹر سید کلیم امام کی ہدایت پررحیم یار خان،راجن پور پولیس اورسپیشل آپریشن یونٹ کے جوانوں نے کچے کے علاقے میں خطرناک ڈاکوؤں کے خلاف کامیاب آپریشن کے بعد صادق آبادکی بستی ڈنگڑہ سے اغوا ء ہونے والے 12مزدوروں کوبحفاظت بازیاب کروالیا ۔ تفصیلات کے مطابق 4 اور 5 جولائی کی درمیانی شب اسلحہ سے لیس بدنام زمانہ اغواء کارکشتیوں کے ذریعے بستی ڈنگرہ موضع نظر محمد جھلن میں داخل ہوئے اور اسلحہ کے زور پر 10 افراد مسمیان غلام فرید ، نذیر احمد ، ناصر ، منور، شاہد، امین ، امیر بخش ، محمد نواز ، قیصر اور یوسف کو اغواء کر کے جزیرہ کچی لُنڈ لے گئے جبکہ اس سے دو روزقبل اغواء کاروں نے عبد الحکیم اور اس کے والد جان محمد بگٹی کو بھی اغواء کیا تھا۔ آئی جی پنجاب ڈاکٹر سید کلیم امام نے واقعے کا فوری نوٹس لیتے ہوئے پولیس کو مغویوں کی بازیابی کے لئے اغوا کار ڈاکوؤں کے خلاف کاروائی کا حکم دیا تھا ۔ آئی جی پنجاب کی ہدایت پر رحیم یار خان اور راجن پور پولیس کی ٹیموں کے ساتھ ساتھ سپیشل آپریشنز یونٹ اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کی ٹیموں نے کچی لُنڈ کا محاصرہ کر لیا جو کہ تین روز تک جاری رہا۔اس آپریشن کے دوران پولیس اور ڈاکوؤں کے درمیان مسلسل دو دن فائرنگ کا تبادلہ ہوتا رہا لیکن پنجاب پولیس نے آپریشن جاری رکھا اور بالاخرتمام مغویوں کو بحفاظت بازیاب کروالیا۔ اس کاروائی کے دوران ڈاکو اپنے ٹھکانے چھوڑ کر فرار ہو نے پر مجبور ہو گئے جبکہ پولیس ٹیموں کی جانب سے ڈاکوؤں کا تعاقب تاحال جاری ہے ۔ آئی جی پنجاب نے مغویوں کو خطرناک ڈاکوؤں کے قبضے سے بازیاب کروانے کے لئے آپریشن میں حصہ لینے والی راجن پور اور رحیم یار خان اضلاع کی پولیس ٹیموں ، سپیشل آپریشنز یونٹ کے جوانوں اور دونوں اضلاع کے ڈی پی اوز کو شاباش دیتے ہوئے کہا کہ پنجاب پولیس نے ماضی میں بھی بہادری اور فرض شناسی کی لازوال تاریخ رقم کی ہے۔

مزید : علاقائی


loading...