عدالتی نظام اصلاحات کیس ، فریقین کو 10روز میں جواب جمع کرانے کا حکم

عدالتی نظام اصلاحات کیس ، فریقین کو 10روز میں جواب جمع کرانے کا حکم

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر)سپریم کورٹ میں عدالتی نظام میں اصلاحات سے متعلق کیس میں فریقین کو دس روز میں جواب جمع کرانے کا حکم دے دیاجبکہ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ نظام عدل میں اصلاحات کے لئے بڑے بڑے وکلاء کی منتیں کیں مگر کسی نے میری مدد نہیں کی، مجھے زندگی بھر تکلیف رہے گی کہ اپنے گھر سے مدد نہیں ملی، میں اکیلا کچھ نہیں کر سکتا تسلیم کرتا ہوں تاحال عدالتی اصلاحات میں کامیاب نہیں ہوئے۔منگل کے روز چیف جسٹس کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے نظام عدل سے متعلق کیس کی سماعت کی ، سماعت کے دوران درخواست گزار عمر گیلانی نے موقف اپنایا کہ جھوٹے گواہان اورجھوٹی گواہی کے حوالے سے قوانین بنانے کی ضرورت ہے، چیف جسٹس نے کہا کہ ہم نے 30 دونوں میں فیصلہ سنانے کا کہا ہوا ہے، لیکن کیا ہم عدالتوں میں سچ بولتے ہیں، نظام عدل میں اصلاحات کے لئے بڑے بڑے وکلاء کی منتیں کیں مگر کسی نے میری مدد نہیں کی، چیف جسٹس نے کہا کہ مجھے کہا جاتا ہے عدالت میں اونچا بولتا ہوں، اتنا کام کرنا پڑتا ہے، جب کام میں نتیجہ نہ نکلے تو پھر انسان کا ایسا رویہ ہو جاتا ہے، میں نے سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشنکے صدر کلیم پیر خورشید سے درخواست کی کے مدد کریں اس معاملے میں ، چیف جسٹس نے کہاکہ مجھے زندگی بھر تکلیف رہے گی اپنے گھر سے مدد نہیں ملی، وکلا کو بلا بلا کر کہا اصلاحات ہے تجاویز دیں، میں نے بلا بلا کر عدالتی اصلاحات پر سب کی منتیں کیں، چیف جسٹس بننے کے دو ماہ بعد ہی وکلا سے اصلاحات کیلئے مدد مانگی، میری درخواست اس قوم کیلئے تھیں کہ نظام میں اصلاحات ہو جائیں، اس سے زیادہ میں کیا کر سکتا تھا، روز کہتا رہا اصلاحات پر تجاویز دیں، چیف جسٹس نے کہا کہ ٹرائل کیسے ہوگا اپیل کیسے ہو چاہتا تھا اس پر بہتری کی تجاویز آتیں، ابھی تک اس معاملے میں کچھ نہیں ہوا، ناکامی پر دکھ ہوا، شاید یہ داغ اپنے ساتھ لیکر جاوں،میں اکیلا کچھ نہیں کر سکتا تسلیم کرتا ہوں تاحال عدالتی اصلاحات میں کامیاب نہیں ہوئے، ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہا کہ 15 قوانین میں تبدیلیاں کی ہیں،اس پر عدالت نے ایڈیشنل اٹارنی جنرل کو قوانین میں تبدیلیوں کی کاپی درخواست گزار کوفراہم کرنے کا حکم دیدیا اور فریقین کو نظام عدل میں اصلاحات سے متعلق 10 دونوں میں جوابات داخل کرنے کا حکم دیتے ہوئے کیس کی سماعت چھ اگست تک ملتوی کردی۔

عدالتی نظام

مزید : صفحہ آخر


loading...