آٹا…… سرکاری نرخوں پر دستیاب نہیں!

آٹا…… سرکاری نرخوں پر دستیاب نہیں!

  

صوبائی حکومت کی طرف سے فلور ملز مالکان کو سرکاری گوداموں سے1470 روپے من کے حساب سے گندم کی فراہمی شروع ہو چکی ہے۔ فلور ملز مالکان اور پنجاب حکومت کے درمیان جو سمجھوتہ طے پایا اس کے مطابق20 کلو آٹے کے تھیلے کی پرچون قیمت860روپے مقرر ہوئی، اس طرح سرکاری نرخ کے مطابق ایک تھیلے کے نرخ55روپے بڑھ گئے،اِس سے پہلے یہ قیمت805 روپے تھی،یوں جو آٹا ساڑھے چالیس روپے فی کلو تھا، اس کے نرخ اب43روپے فی کلو ہو گئے۔سینئر صوبائی وزیر نے دعویٰ کیا کہ بازار میں آٹا سرکاری نرخوں پر دستیاب ہے،لیکن حقیقی صورتِ حال یہ ہے کہ فلور ملز کا آٹا اب بھی 1100روپے(20کلو تھیلا) میں بک رہا ہے کہ دس کلو والا555 روپے کا بیچا جا رہا ہے۔یوں فی کلو آٹے کا نرخ اب 57روپے پچاس پیسے ہے، عوام کو ابھی تک کوئی ریلیف نہیں ملی۔ سرکاری گوداموں سے گندم جاری کرنے اور بیرون مُلک سے 10لاکھ ٹن گندم درآمد کرنے کی اجازت دینے کے باوجود آٹا سرکاری نرخوں پر دستیاب نہیں۔عوام میدہ، سوجی نکال لئے جانے والا آٹا بھی نئے سرکاری نرخوں پر نہ ملنے کی شکایت کر ر ہے ہیں، حکومت دعویٰ کرتی ہے تو اسے عملی طور پر ثابت بھی کرنا چاہئے۔نئے نرخنامے کے مطابق آٹے کی سپلائی کو موثر اور بہتر بنانے ہی سے اِس مسئلہ پر قابو پایا جا سکے گا۔ اگرچہ860 روپے20 کلو کے حساب سے صارفین کو ڈھائی روپے فی کلو زیادہ قیمت دینا ہوں گی۔

مزید :

رائے -اداریہ -