شبقدر،دوسری شادی کی اجازت نہ ملنے پر پولیس اہلکار نے خودکشی کرلی

  شبقدر،دوسری شادی کی اجازت نہ ملنے پر پولیس اہلکار نے خودکشی کرلی

  

شبقدر (تحصیل رپورٹر) شبقدر کے علاقے تھانہ بٹگرا م کے حدود جناح پور میں اسسٹنٹ کمشنر پشاور کے ساتھ ڈیوٹی کرنے والے پولیس اہلکار نے دوسری شادی کی اجازت نہ ملنے پر فائر نگ کرکے اپنے دو سالہ بھتیجے کو ہلاک اور سولہ سالہ بہن کو شدید زخمی کرنے کے بعدخو د کو گولی مار کر زندگی کا خاتمہ کردیا تاہم میڈیکل رپوٹ کے مطابق خودکشی کرنے والے کو چھ گولیاں مختلف جگہوں پر لگی ہے جس پر پولیس نے تفشیش شروع کی ہے واقعات کے مطابق مقتول دو سالہ مصطفیٰ کے والد ندیم جان ولد فضل حکیم نے بٹگرام پولیس کو رپورٹ درج کرتے ہوئے بتایا کہ وہ فہیم،ہمشیرہ،اوراہلحانہ کے ہمراہ گھر میں موجود تھے کہ اس دوران کے بھائی فہیم جوکہ پشاور میں محکمہ پولیس میں ملازمت کرتے ہیں گھریلوں ناچاقی کی بنیاد پردوسری شادی کرنے کے بضد تھے مگر خاندان کی طرف سے دوسری شادی کی اجازت نہ ملنے پر وہ اکثر جھگڑے کرتے تھے وقوعہ کے روز انہوں نے طیش میں آکر پستول نکال کر فائر نگ شروع کی جس سے پسر ام مصطفی سولہ سالہ بہن عائشہ گولی لگ کر شدید زخمی ہوئے اوربعد فہیم نے اپنے آپ پر فائرنگ کرکے خودکشی کی۔بعد ازاں دو سالہ مصطفی ہسپتال میں زخموں کو تاب نہ لاکر چل بسا جبکہ ہمشیرہ ہسپتال میں شدید زخمی خالت میں زیر علاج ہے پولیس بٹگرام نے ندیم جان کی طرف سے رپورٹ درج کرکے تفشیش شروع کی۔ادھر میڈیکل رپورٹ کے مطابق خودکشی کرنے والے فہیم کو مختلف جگہوں پر تین سے چھ گولیاں لگی ہے اس حوالے سے ایس ایچ او بٹگرا م قیصر خان نے صحافیوں کو میڈیکل رپورٹ کی تصدیق کرتے ہوئے بتایاکہ پولیس اس حوالے سے مختلف زاویوں پر تفشیش کررہے ہیں اور مدعی کی بیوی اور زخمی ہونے والے عائشہ جو کہ موقع پر موجود تھے سے بھی بیانات قلم بند کرکے اصل حقائق سامنے لائینگے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -