مینٹیننس کے نام پر گھنٹوں بجلی بند‘ صارفین اذیت کا شکار

  مینٹیننس کے نام پر گھنٹوں بجلی بند‘ صارفین اذیت کا شکار

  

ملتان (نیوز رپورٹر) میپکو انتظامیہ کی جانب سے بجلی سپلائی تنصیبات کی درستگی کے نام پر گھنٹوں بجلی کی بندش نے صارفین کی چیخیں نکلوادی ہیں گھریلو صارفین پر مسلط کی جانیوالی 6 سے 8 گھنٹوں پر محیط غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ اور سپلائی میں بار بار کی ٹرپنگ اس شدید گرمی اور حبس کے موسم میں کسی عذاب سے کم نہ ہے اس پر ستم ظریفی یہ کہ میپکو سب ڈویڑنز میں بجلی کے تعطل کی شکایات کے ازالہ کے لیئے مامور افسران و عملہ شہریوں کی داد رسی و شکایات سننے کی بجائے تمام رابطے منقطع کرکے بے حسی کے سارے ریکارڈ توڑنے پر تلا ہوا ہے اور دوسری طرف میپکو صارفین بجلی کی غیر اعلانیہ(بقیہ نمبر6صفحہ6پر)

لوڈ شیڈنگ اور ٹرپنگ کی اذیت کو گرمی کی اس شدت کو بھگتنے پر مجبور ہیں میپکو عملہ کی بے حسی و صارفین سے لاتعلقی کی انتہا یہ ہے میپکو کے زیر انتظام تمام سب ڈویڑنز کے ایس ڈی اوز اپنے رابطے منقطع کرکے صارفین کے لیئے مزید تشویش و لایقینی کی کیفیت کا باعث بن رہا ہے صارفین نے پاکستان آفس فون کرکے بتایا ہے کہ ان کے علاقہ میں غیر اعلانیہ لوڈ شیدنگ معمول بنتی جارہی ہے جبکہ سب ڈویڑن کے ذمہ داران کے فون مصروف کردینے سے رابطہ نہیں ہوپاتا جس کے باعث شہری دہری اذیت سے دوچار ہوکر رہ جاتے ہیں انہوں نے مزید بتایا کہ بجلی کی بار بار ٹرپنگ سے گھریلو صارفین کو ہزاروں روپے مالیت کے گھریلو الیکٹرونکس سامان سے بھی محروم ہونا پڑ جاتا ہے جو کہ سراسر ذیادتی کے مترادف ہے صارفین نے میپکو حکام سے مطالبہ کیا ہے اس غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ سے شہریوں کو نجات دلانے سمیت ٹرپنگ کو کنٹرول کیا جائے جس سے صافین کا گھریلو الیکٹرونکس کا سامان محفوظ رہ سکے اور تمام سب ڈویڑنز کے ایس ڈی اوز سمیت دیگر عملہ کو صارفین کی کال رسیو کرنے اور انہیں بجلی سپلائی کے تعطل بارے آگاہی دینے کا پابند کیا جائے اور جو صارفین کے حقوق کی حق تلفی کا مرتکب ہو اس کے خلاف محکمانہ کاروائی کی جائے۔

اذیت

ڈہرکی (نامہ نگار) کچے کے علاقے میں ڈاکوؤں اور پولیس کے درمیان آج ساتویں روز بھی مقابلہ جاری ہے تاہم ابھی تک کی معلومات کے مطابق پولیس کو کو ئی بڑی کامیابی نہیں مل سکی ہے جبکہ ضلع گھوٹکی میں نئے مقرر ہوئے والے ایس ایس پی گھوٹکی عمر طفیل گنڈاپور نے گزشتہ روز جارج سمبھالتے ہی جاری پولیس اور ڈاکوؤں کے مابین مقابلہ والے رونتی کچے (بقیہ نمبر7صفحہ6پر)

کے علاقے میں رات کے وقت پہنچ گئے آپریشن کی نگرانی کرنے والے افسران اور اس میں حصہ لینے والے پولیس اہلکاروں سے ملیاور جوانوں کو شباشی اور حوصلہ دیتے ہوئے کہا کہ ڈاکو ہمارے معاشرے میں ناسور بن چکے ہیں انکے خلاف ڈٹ کر مقابلہ کرنے کی ضرورت ہے میں بھی آپکے ساتھ میدان میں رہوں گا اور جب تک ضلع گھوٹکی میں ایک بھی ڈاکو موجود رہیگا تب تک پولیس آپریشن جاری رہے گا انہوں نے کہا کہ ضلع گھوٹکی کوڈاکوؤں اور دیگر جرائم پیشہ عناصر سیپاک کرکے دم لینگے واضح رہے کہ نئے ایس پی کے پہنچتے ہی آپریشن میں تیزی آگئی ہے گزشتہ روز پانچ ڈاکو زخمی اور دس گرفتار ہوئے تھے اور تھانہ سرحد کاایس ایچ او آغا شمش الدین پٹھان اور تین پولیس اہلکار بھی معمولی زخمی ہوئے تھے جبکہ کے سات دن کے دوران ایسی کاروائی نہیں ہوسکی تھی پولیس ترجمان کے مطابق آج رات یا کل تک پولیس کوبہت بڑی کامیابی ملنے والی ہے جبکہ نئے مقرر ہونے والے ایس ایس پی کو آید یہ معلومات نہیں دی گئی تھی کہ کچے میں جاری آپریشن کے دوران تین ایس ایچ او ز سمیت 10 سے زاید پولیس اہلکار زخمی ہوچکے ہیں ایسا سوال کرنے پر ایس ایس پی نے کہا زخمی کوئی نہیں ہے ایک ایس ایچ او معمولی زخمی ہوا ہے. آخری اطلاعات کے مطابق پولیس اور ڈاکوؤں کے مابین مقابلہ جاری تھا پولیس اور ڈاکوؤں کیدرمیان وقفے سے فائرنگ کا سلسلہ جارہی ہے۔

زخمی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -