کچے کے علاقے میں آپریشن تیز‘ فائرنگ کا تبادلہ‘ایس ایچ او زخمی

کچے کے علاقے میں آپریشن تیز‘ فائرنگ کا تبادلہ‘ایس ایچ او زخمی

  

ڈہرکی (نامہ نگار) کچے کے علاقے میں ڈاکوؤں اور پولیس کے درمیان آج ساتویں روز بھی مقابلہ جاری ہے تاہم ابھی تک کی معلومات کے مطابق پولیس کو کو ئی بڑی کامیابی نہیں مل سکی ہے جبکہ ضلع گھوٹکی میں نئے مقرر ہوئے والے ایس ایس پی گھوٹکی عمر طفیل گنڈاپور نے گزشتہ روز جارج سمبھالتے ہی جاری پولیس اور ڈاکوؤں کے مابین مقابلہ والے رونتی کچے (بقیہ نمبر7صفحہ6پر)

کے علاقے میں رات کے وقت پہنچ گئے آپریشن کی نگرانی کرنے والے افسران اور اس میں حصہ لینے والے پولیس اہلکاروں سے ملیاور جوانوں کو شباشی اور حوصلہ دیتے ہوئے کہا کہ ڈاکو ہمارے معاشرے میں ناسور بن چکے ہیں انکے خلاف ڈٹ کر مقابلہ کرنے کی ضرورت ہے میں بھی آپکے ساتھ میدان میں رہوں گا اور جب تک ضلع گھوٹکی میں ایک بھی ڈاکو موجود رہیگا تب تک پولیس آپریشن جاری رہے گا انہوں نے کہا کہ ضلع گھوٹکی کوڈاکوؤں اور دیگر جرائم پیشہ عناصر سیپاک کرکے دم لینگے واضح رہے کہ نئے ایس پی کے پہنچتے ہی آپریشن میں تیزی آگئی ہے گزشتہ روز پانچ ڈاکو زخمی اور دس گرفتار ہوئے تھے اور تھانہ سرحد کاایس ایچ او آغا شمش الدین پٹھان اور تین پولیس اہلکار بھی معمولی زخمی ہوئے تھے جبکہ کے سات دن کے دوران ایسی کاروائی نہیں ہوسکی تھی پولیس ترجمان کے مطابق آج رات یا کل تک پولیس کوبہت بڑی کامیابی ملنے والی ہے جبکہ نئے مقرر ہونے والے ایس ایس پی کو آید یہ معلومات نہیں دی گئی تھی کہ کچے میں جاری آپریشن کے دوران تین ایس ایچ او ز سمیت 10 سے زاید پولیس اہلکار زخمی ہوچکے ہیں ایسا سوال کرنے پر ایس ایس پی نے کہا زخمی کوئی نہیں ہے ایک ایس ایچ او معمولی زخمی ہوا ہے. آخری اطلاعات کے مطابق پولیس اور ڈاکوؤں کے مابین مقابلہ جاری تھا پولیس اور ڈاکوؤں کیدرمیان وقفے سے فائرنگ کا سلسلہ جارہی ہے۔

زخمی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -