شہر کے 711مقامات سے ڈینگی لارو ا کو تلف کر دیا گیا

شہر کے 711مقامات سے ڈینگی لارو ا کو تلف کر دیا گیا

  

لاہور(جنرل رپورٹر)  سیکرٹری محکمہ پرائمری اینڈ سکینڈری ہیلتھ کیئرسارہ اسلم کی ہدایت پرمحکمہ صحت نے پنجاب بھر میں ڈینگی سے بچاؤ کی سر گرمیاں تیزکر دی ہیں۔رواں سال صوبہ بھر سے ڈینگی کے 56کنفرم کیسزسامنے آئے۔رواں سال کے دوران اب تک لاہور میں ڈینگی سے26کنفرم کیسز سامنے آئے اور اس وقت لاہور سمیت پنجاب بھر کے ہسپتالوں میں کوئی بھی مریض زیر علاج نہیں ہے۔محکمہ صحت کی صوبہ بھر میں ڈینگی کے لاروا کو تلف کرنے اور افزائش روکنے کے لیے بھرپور کاروائیاں جاری ہیں۔پچھلے 24 گھنٹوں میں پنجاب بھر میں 316,870 ان ڈور مقامات اور 74,535 آؤٹ ڈور مقامات کو چیک کیا گیا اور711مقامات سے لاروا تلف کیا گیا۔ لاہور میں 33,289 گھروں کی اور 6,473 آؤٹ ڈور مقامات کی ڈینگی لاروا کے حوالے سے  بھرپور طریقہ سے چیکنگ کی گئی۔ اور کل458 مقامات سے پازٹیو کینٹینرز کو تلف کیا گیا۔رواں سال لاہور سے ڈینگی کے ٹوٹل 26مریض رپورٹ ہوئے ہیں اور اس وقت لاہور کے ہسپتالوں میں کوئی بھی مریض زیرِعلاج نہیں ہے۔اس ضمن میں سیکرٹری سارہ اسلم کا کہناتھا کہ کورونا کی وبا سے بچاؤ کی احتیاط کے ساتھ ساتھ ڈینگی سے بچاؤ کی احتیاطی تدابیر بھی اپنائیں۔ اپنے ارد گرد کے ماحول کو صاف رکھ کر اپنے ذمہ دار شہری ہونے کا ثبوت دیں۔گھروں کے اندر یا باہر پانی کھڑا نہ ہونے دیں. پرندوں اور جانوروں کے پانی والے برتن صاف رکھیں۔ اپنے گھر کے روشن دان، کھڑکیوں اور دروازوں پر جالی لگا کر رکھیں نیز دیہی علاقوں کے رہائشی مچھر دانی لگا کر سوئیں کیونکہ صفائی ستھرائی کا خیال رکھ کر ڈینگی مچھر کی افزائش کو روکا جا سکتا ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ عوام سے گزارش ہے کہ اگر محکمہ صحت کی ٹیمیں آپ کے گھر یا کاروباری مراکز میں ڈینگی کے لاروا کے حوالے سے چیکنگ کرنے کے لئے آئیں تو ان سے بھرپور تعاون کیا جائے کیونکہ ڈینگی انتہائی خطرناک بخار ہے جو کہ جان لیوا ثابت ہوسکتا ہے۔۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -