پاکستان میں کورونا کی نئی بھارتی قسم ڈیلٹا کے اثرات ظاہر ہونا شروع 

پاکستان میں کورونا کی نئی بھارتی قسم ڈیلٹا کے اثرات ظاہر ہونا شروع 

  

لاہور (جاوید اقبال) کورونا وائرس کی چوتھی لہر، کورو ناکی نئی قسم ڈیلٹا وائرس کے ساتھ سامنے آنا شروع ہوگئی ہے اس لہر کا ڈیلٹا وائرس پلس کے ساتھ باقاعدہ طور پر آغاز ہو گیا، راولپنڈی کے بعد کراچی میں بھی ڈیلٹا وائرس میں مبتلا ایک درجن سے زائد مریض سامنے آگئے ہیں پنجاب میں اس نئے وائرس کی تشخیص کے لیے کام شروع ہو گیا ہے اور تقریبا پانچ سو سے زائد مریضوں کے ٹیسٹ بھجوا دئیے گئے ہیں پیر یا منگل کو نتائج سامنے آئیں گے نئی قسم کے مریض موجود ہیں یا نہیں کورونا کی پاکستان میں نئی ڈیلٹا وائرس نامی قسم انگلینڈ اور انڈیا سے آئی ہے ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ قسم وہاں سے بذریعہ ہوائی جہاز آنے والے لوگ لائے ہیں اگر ایئرپورٹ پر چیکنگ کا سخت انتظام ہوتا تو یہ وائرس پاکستان میں داخل نہ ہوتا دوسری طرف ماہرین نے خطرے کی گھنٹی بجا دی ہے گزشتہ تین روز سے کرونا وائرس کے مریضوں میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے جس سے صاف ظاہر ہوگیا ہے کہ کورونا کی چوتھی لہر کا پاکستان میں آغاز ہوگیا ہے تاہم اس کو روکنے کے لیے انفورسمینٹ اور قانون نافذ کرنے والے اداروں نے تاحال خاموشی اختیار کر رکھی ہے۔ نئی قسم کی سب سے بڑی علامت یہ ہے کہ اس میں مریض کو فلو نہیں ہوتا عام طور پر مریض کا گلا خراب نہیں ہوتا ہے نہ اسے بخار ہوتا ہے سب سے اہم اور مرکزی علامت یہ ہے کہ مریض کو بھوک لگنا بند ہو جاتی ہے مریض کی بھوک ختم ہونے کے ساتھ ساتھ اس کے سر کمر ٹانگوں میں شدید درد ہوتا ہے پیٹ میں درد کی علامت سامنے آئی ہے آنکھوں کے پیچھے بھی شدید درد مریض کو محسوس ہوتا ہے جبکہ ڈیلٹا وائرس میں مبتلا مریض کی عام علامت گردن میں درد بھی سامنے آئی ہے نمونیا کی بھی شکایات ہو سکتی ہیں بخار نہ بھی ہو چیسٹ ایکسرے یا سی ٹی سکین کرنے سے اس مرض کی تشخیص ہوتی ہے اس مرض سے بچنے کا واحد حل کرنا ایس او پیز سختی سے عمل کرنا ہے۔

 ڈیلٹا وائرس

مزید :

صفحہ اول -