آٹو پالیسی پر تنقیدبلا جواز، (ن) لیگی لیڈرشپ مستقبل کی ٹیکنالوجی سے نابلد 

آٹو پالیسی پر تنقیدبلا جواز، (ن) لیگی لیڈرشپ مستقبل کی ٹیکنالوجی سے نابلد 

  

اسلام آباد(آئی این پی)وفاقی وزیر صنعت و پیداوار مخدوم خسرو بختیار نے کہا ہے کہ عام آدمی کو ریلیف کی فراہمی وزیراعظم عمران خان کی پہلی ترجیح ہے، نچلے طبقے کو اوپر لانا ان کا پختہ عزم ہے، شہباز شریف، وزیراعظم عمران خان کی معاشی و سیاسی حکمت عملی کے باعث کلین بولڈ ہو چکے ہیں،آٹو پالیسی میں عام آدمی بالخصوص وہ نوجوان جنہوں نے پہلی بار گاڑی خریدنی ہے، ہم نے انہیں سہولت دی ہے جس پر تنقید بلا جواز ہے، تفصیلات کے مطابق ہفتہ کو مسلم لیگ (ن)کے  صدر شہباز شریف کے بیان پر ردعمل  کا اظہار کرتے ہوئے مخدوم خسرو بختیار نے کہا کہ  الیکٹرک وہیکل پالیسی اور نئی آٹو پالیسی پر تنقید سے ظاہر ہوتا ہے کہ مسلم لیگ(ن)کی لیڈر شپ مستقبل کی ٹیکنالوجی سے نابلد ہے، انہیں کوئی احساس نہیں کہ دنیا کدھر جا رہی ہے، الیکٹرک گاڑیاں، موٹر وہیکل ٹیکنالوجی کا مستقبل ہیں،عام آدمی کو ریلیف کی فراہمی وزیراعظم عمران خان کی پہلی ترجیح ہے، نچلے طبقے کو اوپر لانا ان کا پختہ عزم ہے،آٹو پالیسی میں عام آدمی بالخصوص وہ نوجوان جنہوں نے پہلی بار گاڑی خریدنی ہے، ہم نے انہیں سہولت دی ہے جس پر تنقید بلا جواز ہے، مخدوم خسرو بختیار نے کہا کہ   نون  لیگ ہر اس فلاحی کام پر تنقید کرتی جس کا فائدہ عوام کو براہ راست پہنچے، عالمی منڈی میں تیل کی قیمتوں اور فضائی آلودگی کے پیش نظر کئی ممالک الیکٹرک گاڑیوں کے استعمال کی حمایت کر رہے ہیں، بدقسمتی سے اپوزیشن لیڈر نے عوام کو گمراہ کرنے کے لئے اعداد و شمار کی غلط تشریح کی، خسرو بختیار نے کہا کہ یکم جولائی 2021کو کنزیومر پرائس انڈیکس سے ظاہر ہوتا ہے کہ قومی سطح پر سالانہ افراط زر 8.9فیصد پر ہے جو ایک سال پہلے 10.74فیصد تھا،شہری اور دیہی افراط زر 8.15فیصد اور 10.05فیصد پر ہے جو ایک سال قبل بالترتیب 10.17فیصد اور 11.63فیصد پر تھا جس سے واضح ہوتا ہے کہ افراط زر میں کمی آ رہی ہے،قیمتوں کے حساس اشاریئے(ایس پی آئی)پر نظر ڈالی جائے تو افراط زر تیزی سے نیچے آ رہا ہے، انہوں نے کہا کہگزشتہ دو ماہ کیلئے ہفتہ وار افراط زر 20مئی کو 17.23فیصد کی بلند سطح سے 8جولائی 2021کو 12.28فیصد ہو گیا جو ایس پی آئی میں ایک نمایاں کمی ہے، اپوزیشن لیڈر کا دعوی کہ اشیائے ضروریہ کا پرائس انڈیکس 15.37فیصد پر ریکارڈ کیا گیا، من گھڑت ہے،ایسا کوئی انڈیکس نہیں ہے جس میں سب سے کم آمدن والے گروپ کے لئے قیمتوں میں 20فیصد اضافہ ظاہر کیا گیا ہو جیسے کہ لیڈر آف اپوزیشن نے دعوی کیا ہے، مخدوم خسرو بختیار نے کہا کہ موجودہ حکومت جب اقتدار میں آئی تو پاکستان معاشی بحران کا شکار تھا، ن لیگ نے بے پناہ قرضے لئے جس کا خمیازہ قوم بھگت رہی تھی،،ملک کو درپیش تمام معاشی مسائل اس کمزور معیشت کا براہ راست نتیجہ ہیں جو 2008سے 2018تک پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ (ن)کی حکومتوں کی مشترکہ بد انتظامی کے بعد پی ٹی آئی کو ورثہ میں ملی، ہم نے تین سالوں میں معاشی سمت درست کی، کورونا وباکے محاذ پر بھی کامیابی سے مقابلہ کیا، صنعتوں اور زراعت کو بحال کیا، آج انہی اقدامات کی بدولت عوام کی قوت خرید میں اضافہ ہو چکا ہے،  وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ شہباز شریف، وزیراعظم عمران خان کی معاشی و سیاسی حکمت عملی کے باعث کلین بولڈ ہو چکے ہیں۔

خسرو بختیار

مزید :

صفحہ آخر -