قرآن وسنت کیخلاف کوئی بھی قانون سازی نہیں ہوگی، اسد قیصر 

قرآن وسنت کیخلاف کوئی بھی قانون سازی نہیں ہوگی، اسد قیصر 

  

 اسلام آباد(آن لائن) جماعت اسلامی سندھ کے امیروسابق ایم این اے محمد حسین محنتی نے پارلیمنٹ ہاؤس اسلام آباد میں قومی اسمبلی کے اسپیکر اسد قیصر سے ملاقات کی۔دونوں رہنماوں نے ملک وملت کی صورتحال اور جمہوریت کے فروغ کیلئے باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا۔صوبائی امیر محمد حسین محنتی نے پارلیمنٹ ہاؤس میں اپوزیشن وحکومتی بینچوں پر بیٹھنے والے بعض ارکان اسمبلی کے غیر سنجیدہ رویہ اور پارلیمنٹ کی غیرتسلی بخش کارکردگی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے زور دیا ملک وملت کے مسائل سمیت ملک میں آئین وقانو ن کی بالادستی اور جمہوریت کے فروغ کیلئے پارلیمنٹ کا کردار مؤثر اور بہتر روایات کو قائم کرنا چاہئے۔صوبائی امیر نے نصاب تعلیم کو سیکولر بنانے،وقف املاک اور گھریلو تشد بل پر بھی اپنی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا پاکستان اسلام وکلمہ طیبہ کے نام پر معرض وجود میں آیا تھا، نصاب تعلیم کو سیکولر، وقف املاک اورگھریلو تشد بل اسلام ونظریہ پاکستان کیخلاف ہیں،گھریلو تشدد بل اسلامی اقدارپرحملہ اور ہمارے خاندانی نظام کو تباہ کرنے کی سازش ہے، جمہوریت کو قرآن وسنت کیخلاف استعمال کرنے کی بجائے قرآن وسنت کے تابع کرنا ہوگا۔سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے صوبائی امیر کو یقین دلایا کہ ان کے ہوتے ہوئے قرآن وسنت کیخلاف کوئی بھی قانون سازی نہیں ہوگی،گھریلو تشد د بل کو اسلامی نظریاتی کونسل کو بھیجا ہے علماء سے مشاورت کے بعد اس میں ترمیم کا سوچ رہے ہیں، میری کوشش ہے پارلیمنٹ کے وقار کو بحال اور اپوزیشن وحکومتی ارکان کو ساتھ لیکر ملک وقوم کے مفاد میں قانون سازی اور پارلیمنٹ کے کردار کو مزید مؤثر بنائیں گے۔

اسد قیصر

مزید :

صفحہ آخر -