شیر گڑھ،کرونا وائرس کے متاثرہ افراد میں اضافہ ہونا خطرے کی گھنٹی 

شیر گڑھ،کرونا وائرس کے متاثرہ افراد میں اضافہ ہونا خطرے کی گھنٹی 

  

شیرگڑھ (نا مہ نگار) کرونا وائرس کے متاثرہ افراد میں اضافہ ہونا خطرے کی گھنٹی ہے اگر شہریوں نے ذمہ داری کا مظاہرہ نہ کیا  تو کرونا وائرس کا پھیلنا کوئی روک نہیں سکے گا جبکہ کرونا کی چوتھی لہر کی بھی اشارے مل رہے ہیں تمام شہریوں سے اپیل ہیں کہ کرونا ایس او پیز پر فوری طور پر عمل درامد کو یقینی بنائے ماسک کا استعمال اپنے اپ پر لازم کریں ایسا نہ ہو کہ حکومت دوبارہ لاک ڈاون کے طرف گامزن ہو جاہیں ان خیالات کا اظہار تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال تخت بھائی کے کرونا وارڈ کے انچارج سید قاسم شاہ نے صحافیوں سے بات چیت کے دوران کیا  انہوں نے کہا کہ جولائی کے ریکارڈ کے مطابق ضلع مردان اور تحصیل تخت بھائی میں کرونا سے مزید 7افراد متاثر ہو گئے جن میں 60سالہ مسماۃ (ت) 36سالہ فیض الرحمان 36سالہ شاہجان خان 46سالہ قیصر علی خان 50سالہ میر اعظم خان 40سالہ محبوب احمد اور70سالہ شیر بہادر خان شامل ہیں ڈاکٹر سید قاسم شاہ نے تمام شہریوں سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ چند دن سے تمام شہریوں نے ایس او پیز کو نظر انداز کر دیا اور کوئی بھی شہری ماسک یا سینی ٹائزر کا استعمال نہیں کرتے اور بازاروں میں عید الضحیٰ کی امد کی وجہ رش بڑھ گیا ہے لیکن نہ تو دوکاندار ایس او پیز پر عمل کرتا ہے اور نہ عام شہری ماسک لگانے پر تیار ہے اگر یہ بے احتیاطی اس طرح برقرار رہا تو کوئی بھی کرونا وائرس کو مزید پھیلنے سے نہ روک سکے گا انہوں نے تمام شہریوں اور تاجر برادری سے ہمدردانہ اپیل کی کہ کرونا وائرس کی روک تھام کے لئے احتیاطی تدابیر پر فوری طور پر عمل دامد شروع کریں کیونکہ کرونا وائرس لہ چوتھی لہر انتہائی خطرناک ہیں اور حکومت مجبوراََ لاک ڈاون پر مجبور جائینگے 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -