آب پاک اتھارٹی متحرک، ڈیرہ، بہاولپور ڈویژن پر فوکس کرلیا: چودھری محمد سرور 

آب پاک اتھارٹی متحرک، ڈیرہ، بہاولپور ڈویژن پر فوکس کرلیا: چودھری محمد سرور 

  

  

ملتان،مظفرگڑھ(سپیشل رپورٹر،خبرنگار) ڈیرہ غازی خان اور بہاولپور ڈویژن میں جلد ہی آب پاک اتھارٹی  جانب سے سو سے زیادہ  صاف اور معیاری  (بقیہ نمبر18صفحہ6پر)

پانی کے پلانٹ کام کرنا شروع کر دیں گے۔ان خیالات کا اظہار گورنر پنجاب چوھدری محمد سرور نے معروف صنعت کار خواجہ جلال الدین رومی کی طرف سے دیئے گئے صبحانے میں کیا۔انھوں نے کہا کہ آپ پاک اتھارٹی کو یونسیف نے صاف پانی کی فراہمی کے لئے نئے منصوبوں پر کام کر نے کے لئے پچاس ہزار ڈالر دئییگئے ہیں۔جو خواجہ جلال الدین رومی  کی سفارش پر ملتان شہر کے 11 پلانٹ کی آپ گریڈیشن  کے لئے استعمال ہوئے ہیں۔ اس کے علاوہ ملتان کے پلانٹ  جلال الدین رومی فاونڈیشن کی نگرانی  میں کام کرے گی۔ اور  جنوبی پنجاب کے صاف پانی کے تمام منصوبوں کی نگرانی کے لئے صوبائی وزیر توانائی ڈاکٹر اختر ملک کی سربراہی میں  کمیونٹی کے اہم افراد پر مشتمل ایک کنسورشیم بنایا جائے گا۔اس سلسلہ میں صاف پانی کی فراہمی کے منصوبوں کو ملتان کو ماڈل  سٹی بنایا جائے گا۔ جس کے بعد ملتان کے ہر علاقے کو صاف پانی کی فراہمی ممکن ہو سکے گی۔تقریب کے میزبان خواجہ جلال الدین رومی نے کہا کہ جنوبی پنجاب میں شدید گرمی کی وجہ سے صاف پانی کی فراہمی ایک ایسا اقدام ہے۔جس کے لیے ہم حکومت اور آب پاک اتھارٹی کے شکر گزار ہیں۔کہ یہ اتھارٹی ہنگامی بنیادوں پر صاف پانی کی فراہمی کے لئے نئے منصوبوں پر کام کر رہی ہے۔خواجہ جلال الدین رومی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم کے ویثرن کے مطابق گورنر پنجاب چوھدری محمد سرور اور وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار نے پنجاب ایگری کلچرل کمیٹی کی سفارشات کو منظور کرتے ہوئے کپاس کی پیداوار بڑھانے کے لیے امدادی قیمت 5000 روپے کرنے کی سفارش کی ہے۔ اور سفارشات اب وزیراعظم پاکستان عمران خان کے پہنچ گئی۔امید ہے کہ حکومت پنجاب ایگری کلچرل کمیٹی کی سفارشات پر پوری طرح عمل درآمد کرائے گی۔خواجہ جلال الدین رومی نے کہا کہ اس وقت ملکی غذائی ضروریات پوری کرنے کے لیے تقریبا پانچ ارب ڈالر خرچ کئے جا رہے ہیں۔اگر یہی رقم حکومت  خاص طور پر کپاس کے کاشتکاروں کو سبسڈی کے طور ادا کرے تو کپاس کی پیداوار نہ بہت بہتر ہوگی۔بلکہ کاشتکاروں کے ساتھ ساتھ ملک کا قیمتی زرمبادلہ بھی خرچ نہیں ہو گا۔اس وقت ضرورت اس امر کی ہے کہ ادویات اور کھاد پر کاشتکاروں کو براہ راست سبسڑی دی جائے۔اس کے لئے حکومت کو فوری اقدامات کرنے کی ضرورت ھے جس پر سب سے پہلے کپاس کے کاشتکاروں کا خوف دور ہونا چاہیے تاکہ وہ ماضی کی طرح ایک مرتبہ پھر کپاس کو کاشت کرے۔کسان دوست پالیسی ترتیب دے کر ملکی حالات بہتر بنائے جا سکتے ہیں۔کپاس کی فصل کے ساتھ ٹیکسٹائل انڈسٹری کے مسائل کا بھی ادراک کیا جائے۔تاکہ وہ بھی کپاس کی اچھی  فضل کے ثمرات حاصل کر سکے۔صبحانے میں صوبائی وزیر توانائی ڈاکٹر اختر ملک، ایڈیشنل چیف سیکرٹری ثاقب ظفر۔ایڈیشنل آء جی جنوبی پنجاب کیپٹن ظفر اقبال۔۔پنجاب آب پاک اتھارٹی کے ڈاکٹر شکیل احمد۔فواد مختار۔میاں فیصل مختار۔خواجہ محمد اقبال۔خواجہ محمد الیاس۔خواجہ محمد یونس۔علی شہزاد ڈی سی ملتان۔میاں عامر نسیم۔میاں رحمان نسیم۔ عابد رضا بودلہ کمشنر انکم ٹیکس ملتان ریجن۔ڈاکٹر رانا الطاف احمد۔ڈاکٹر آصف قریشی۔سلیم ناصر۔چوھدری ذوالفقار احمد۔کرنل ر باقر نقوی عقیل بھٹہ اور دیگر موجود تھے

سینیٹیشن ورکرز ہمارے ہیروز ہیں گورنرپنجاب چوہدری محمد سرور نے سنٹری  ورکرز کے علاقہ بہاری کالونی مظفر گڑھ میں واٹر فلٹریشن پلانٹ کا وزٹ کیا جو کہ آگاہی اور واٹر ایڈ کی طرف سے لگایا گیا ہے اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ ورکرز ہمارے ہیروز ہیں جو کہ انتہائی پسماندہ حالات اور مختلف متعصبانہ معاشرتی رویؤں کا سامنا کرتے ہوئے ناکافی سہولیات میں زندگی گزارتے ہیں میں آگاہی اور واٹر ایڈ کا مشکور ہوں کہ انہوں نے ورکر کے علاقے میں واٹر فلٹریشن پلانٹ کی تنصیب کی جو کہ کسی نعمت سے کم نہیں اس موقع پر چئیرمین پنجاب آب پاک اتھارٹی ڈاکٹر محمد شکیل احمد خان، ڈاکٹر اختر ملک کوآرڈینیٹر پنجاب آب پاک اتھارٹی ساوتھ پنجاب، مبارک علی سرور سی ای او آگاہی،محمد وقاص طاہر پراجیکٹ منیجر آگاہی، منور حسن ہیڈ آف پروگرامز واٹر ایڈ بھی موجود تھے، علاوہ ازیں ڈاکٹر شکیل احمد خان چئیرمین پنجاب آب پاک اتھارٹی نے آگاہی ٹیم کے ہمراہ بستی بہار شاہ غضنفر گڑھ میں آگاہی کی طرف سے لگائے گئے صاف پانی کے فلٹریشن پلانٹ کابھی افتتاح کیا  ہے۔

جلال الدین رومی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -