سابق سی ای او ہیلتھ ڈاکٹر منور عباس کیخلاف انکوائری رپورٹ فائنل 

سابق سی ای او ہیلتھ ڈاکٹر منور عباس کیخلاف انکوائری رپورٹ فائنل 

  

ملتان (وقائع نگار)  محکمہ صحت پنجاب نے سابق سی ای او ہیلتھ ملتان ڈاکٹر منور عباس کی انکواری رپورٹ تیار کر لی ہے۔جس میں ان پر سنگین نوعیت کے الزامات(بقیہ نمبر35صفحہ6پر)

 ثابت ہوئے ہیں۔انکوائری رپورٹ میں انکشاف ہوا ہے ڈاکٹر منور عباس نے ویکس نیٹرز۔ڈسپنسرز اور دیگر کی بھرتیوں میں اختیارات کا ناجاز استعمال کیا۔سینیر ڈاکٹرز کو نظر انداز کر کے ڈاکٹر یسین کو ڈی ڈی ایچ او کے اختیارات دیے۔کڈنی ہسپتال کے سابقہ ملازمین کو دوبارہ بھرتی کرنے پر لاکھوں روپے رشوت لی۔اس کے علاہ ہومیوپیتھک ڈاکٹر روبینہ سلطانہ کو دس سال کی ایکس پاکستان لیو دینے کا الزام بھی ثابت ہوا ہے۔انکوائری میں ثابت ہوا کہ ڈاکٹر منور عباس نے اپنی تعیناتی کے دوران 2010/11 اور 2018/19 میں مختلف آٹمز کی خریداری کے بوگس بل بھی بنواے تھے۔جبکہ سرکاری ملازمین کو اپنے ذاتی گھر پر لگا کر قومی خزانے سے تنخواہوں کی ادایگی کروائی گئی۔ادویات خریداری میں پیپرا رولز کو نظر انداز کیا گیا۔سرکاری گاڑیوں کا غیر قانونی استعمال کیا اور لاگ بک میں بوگس انٹریز کیں گئیں۔

سی ای او ہیلتھ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -