دھنوٹ پولیس کاڈرائیور، عملے پر وحشیانہ تشدد، بس تھانے بند

دھنوٹ پولیس کاڈرائیور، عملے پر وحشیانہ تشدد، بس تھانے بند

  

 دھنوٹ(سٹی رپورٹر)لیڈیز کانسٹیبل کو کیوں نہیں اٹھایا، تھانہ دھنوٹ پولیس نے ڈرائیور اور عملے کو تشدد کانشانہ بنا(بقیہ نمبر39صفحہ6پر)

کر حوالات میں ڈال کر بس تھانہ میں بند کردی اور مسافر چار گھنٹے روڈ پر کھڑے خوار ہوتے رہے    تفصیلات کے مطابق بہاولپور سے لاہور جانے والی نجی کمپنی کی  بس جب دھنوٹ شہر پہنچی تو احساس کفالت سنٹر سے ڈیوٹی ختم ہونے پر  لیڈیز کانسٹیبل نے کہروڑ پکا جانے کے لیئے روکا تو بس عملہ نے کہاکہ سیٹیں خالی نہیں ہیں جس پر شہر سے دو کلومیٹر دور لیڈیز کانسٹیبل کی کال کرنے پر دھنوٹ پولیس نے بس روک کر سواریاں نیچے اتار دیں ڈرائیور اورعملے پر مبینہ  تشدد کرکے حوالات میں بند کردیا بس میں سوار 46مسافر شدید گرمی میں روڈ پر کھڑے خوار ہوتے رہے کے مسافروں نے بتایا کہ بس عملہ نے بس روک کر لیڈیز کانسٹیبل کو بتایا کہ جگہ نہیں ہے تو تھانہ دھنوٹ پولیس گردی کرتے ہوئے تشدد کیا دوسری جانب معلوم ہوا ہے کہ ڈی پی او لودھراں نے پولیس گردی پر تحقیقات کا حکم دے دیا ہے۔

تشدد

مزید :

ملتان صفحہ آخر -