جتوئی:کیس جیتنے کے بعد سٹوڈنٹس کی انٹرمیڈیٹ امتحان میں بھرپورشرکت

 جتوئی:کیس جیتنے کے بعد سٹوڈنٹس کی انٹرمیڈیٹ امتحان میں بھرپورشرکت

  

 مظفرگڑھ (نامہ نگار) مظفرگڑھ کی تحصیل جتوئی کے گورنمنٹ کوڑا خان ڈگری کالج کے طلبا لاہور ہائیکورٹ ملتان بنچ کے بروقت فیصلے کی وجہ سے انٹرمیڈیٹ کے(بقیہ نمبر42صفحہ6پر)

 امتحانات دینے کے اہل ہو گئے اور طلبا کا قیمتی سال بچ گیا۔ طلبا اور والدیننے ڈھیروں دعائیں۔گورنمنٹ کوڑا خان ڈگری کالج جتوئی کی انتظامیہ کے فراڈ کیس میں جس میں کالج کے کلرکس نے انتظامیہ کے ساتھ مل کر طلبا کے امتحانات انٹرمیڈیٹ کی فرسٹ ائیر اور سیکنڈ ائیر کی امتحانی فیس ڈیرہ غازی خان بورڈ کو بھیجنے کی بجائے خود ہڑپ کر گئے تھے، اس کیس میں  طلبا کی جیت  ہوئی۔ لاہور ہائیکورٹ ملتان بنچ کے فاضل جسٹس صفدر سلیم شاہد نے چیئرمین بورڈ کو ہدایت کی کہ بورڈ متاثر طلبا سے بغیر جرمانہ فیس لے کر رولنمبر سلپ جاری کرے اور طلبا کو رولنمبر سلپ جاری کی جائیں اور امتحان میں بیٹھنے کی اجازت دی جائے۔ اس فیصلے سے والدین اورطلبا میں خوشی کی لہر دوڑ گئی، اس فیصلے کی وجہ سے گزشتہ روز شروع ہونے والے امتحان میں طلبا نے بڑے جوش و خروش سے امتحان دیا۔اس موقع پر جنرل سیکریٹری جتوئی بار ایڈووکیٹ را فہیم اختر جنہوں  نے اس مسئلے کے تمام قانونی پہلوں کو لے کر ہائیکورٹ گئے، صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہمارا مشن طلبا کو رولنمبر سلپ جاری کروا کر امتحان دلوانا تھا، جس میں عدالت عالیہ نے متاثر طلبا کے حق میں فیصلہ سنا کر ہمارا مشن پورا کر دیا اور طلبا کا سال ضائع ہونے سے بچا لیا۔ عدالت عالیہ کے اس فیصلے سے طلبا کا مورال بلند ہوا ہے اور حق و صداقت کی فتح ہوئی ہے۔ ایڈووکیٹ را فہیم اختر نے مزید کہا کہ اب ہمارا اگلا ٹارگٹ وہ کرپٹ کلرک ہیں جنہوں نے طلبا کے ساتھ ظلم کیا اور ان کی پڑھائی کا قیمتی وقت ضائع کیا ہے ان بددیانت کلرکوں کے خلاف ہر اس محکمہ میں کارروائی کریں گے جہاں ان کے خلاف سخت سے سخت ایکشن لیا جا سکے۔اس موقع پر موجود طلبا نے ان کا ساتھ دینے والے ہر شخص اور وکلا خصوصا جنرل سیکریٹری جتوئی بار ایڈووکیٹ را فہیم اختر،شہباز غزلانی، ارسلان چوہدری اور ایڈووکیٹ قاضی وسیم عباس کا شکریہ ادا کیا۔

امتحان

مزید :

ملتان صفحہ آخر -