مینگوفیسٹیول ختم‘ ایونٹ باغبانوں کیلئے فائدہ مند‘ سید فخر امام 

مینگوفیسٹیول ختم‘ ایونٹ باغبانوں کیلئے فائدہ مند‘ سید فخر امام 

  

ملتان (سپیشل رپورٹر) وفاقی وزیر برائے نیشنل فوڈ سکیورٹی اینڈ ریسرچ سید فخر امام شاہ نے کہا  ہے کہ مینگو فیسٹیول کا انعقاد خطہ کے باغبانوں کیلئے بہت مفید ہے جس میں وہ شامل ہو کر آم کی مختلف اقسام سے روشناس ہوتے ہیں۔مینگو فیسٹیول کے انعقاد سے عالمی سطح (بقیہ نمبر45صفحہ7پر)

پر ملکی آم کو روشناس کروانے میں مدد ملی ہے۔بیرون ممالک آم بھجوانے کیلئے اس طرح کے فیسٹیولز ناگزیر ہیں کیونکہ ان فیسٹیولز کے زریعے باغبانوں، زرعی صنعت کاراور برآمد کنندگان کے درمیان روابط مضبوط کرتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انھوں نے ڈی ایچ اے میں منعقدہ مینگو فیسٹول کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح کے فیسٹیول عوام الناس کیلئے بھی یقینی طور پر تفریحی حساب سے منفر د ہیں۔انہوں نے کہاکہ یورپ اور دیگر ممالک اس لیے ترقی کررہے ہیں کہ وہ زراعت میں جدت لا چکے ہیں اور جدید ٹیکنالوجی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے زراعت سے بھر پور منافع حاصل کرتے ہیں اسی لیے پاکستان میں زراعت میں جدت لانے کی بہت ضرورت ہے۔انہوں نے سالانہ کامیاب مینگو فیسٹیول کے انعقاد پر وائس چانسلر جامعہ پروفیسر ڈاکٹر آصف علی کی انتھک کوششوں کوسراہا۔ انہوں نے مزید فیسٹیول میں سٹالز لگانے والی کمپنیوں و باغبانوں اور آم سے بننے والے کھانوں کے مقابلوں میں حصہ لینے والوں میں شیلڈز بھی تقسیم کیں۔ اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر جامعہ پروفیسر ڈاکٹر آصف علی نے کہاکہ کچھ عرصہ پہلے شہروں میں میلے لگائے جاتے تھے جس میں دور دور سے لوگ شرکت کرتے تھے جو کہ اب کے دور میں تقریباً ختم ہو چکے ہیں اسی کوبحال کرنے کیلئے ہر سال مینگو فیسٹیول کا انعقاد کیا جات ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایم این ایس زرعی یونیورسٹی ملتان نے سالانہ مینگو فیسٹیول لگا کر دوبارہ شہر کی رونق بحال کی ہے۔انہوں نے مزید زرعی یونیورسٹی کے ساتھ تعاون کرنے والے ڈی ایچ اے کی انتظامیہ، بہاالدین زکریا یونیورسٹی ملتان اور مینگو ریسرچ انسٹی ٹیوٹ کا شکریہ ادا کیا کہ انہوں نے سالانہ مینگو فیسٹیول کو کامیاب کرنے میں ہمارا ساتھ دیا۔ انہوں نے مزید کہاکہ بہت جلد آم کی ویلیو کو اتنا بڑھانے کی کوشش کرینگے کہ ملک سے باہر بھی دنیا بھر میں ملتان کو آم کی وجہ سے جانا جائے گا۔مینگو فیسٹیول میں ٹیکنکل سیشن کا انعقاد بھی کیا گیا جس میں کاشتکاروں اور ایکسپورٹر زکو آم کی برآمداد کو بہتر کرنے کیلئے عملی تربیت دی گئی۔ اس سیشن میں آم کی مارکیٹنگ کے حوالے سے مختلف مسائل اور مواقع پر سیر حاصل گفتگو کی گئی۔ مینگو فیسٹیول کے اختتامی روز فیمیلز اور بچوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ مینگو فیسٹیول میں لگائے گئے مختلف مینگو سٹالز جو کہ مینگو گروورز کی جانب سے لگائے گئے جہاں پر آم کی 200سے زائد اقسام نمائش میں رکھی گئی تھیں۔آم کی پیکنگ سے وابستہ کمپنیز اور آم کی فصل کو بیماریوں سے بچانے والی ادویات کی کمپنیز کی جانب سے بھی  سٹالز لگائے گئے جہاں پر آم کی فصل کو بیماریوں سے بچانے والی ادویات اور مینگو کی جدید طریقے سے کی جانے والی پیکجنگ میٹریل ڈسپلے کیا گیا۔ قبل ازیں ملتان۔ ایم این ایس زرعی یونیورسٹی کے زیر اہتمام اور بہاالدین زکریا یونیورسٹی، مینگو ریسرچ انسٹی ٹیوٹ ملتان اور ڈی ایچ اے ملتان کے تعاون سے منعقدہ تین روزہ مینگو فیسٹیول اختتام پذیر ہو گیا۔ مینگو فیسٹیول کے تیسرے روز منعقدہ اختتامی تقریب کے مہمان خصوصی منسٹر فار نیشنل فوڈ سکیورٹی اینڈ ریسرچ سید فخر امام شاہ،  وائس چانسلر جامعہ پروفیسر ڈاکٹر آصف علی (تمغہ امتیاز)اورسابقہ ریٹائرڈ ائی جی ریلوے پولیس سید ابن حسین تھے۔مینگو فیسٹیول کے تیسرے روز پینل ڈسکشن، شہریوں کیلئے آم کھانے کے مقابلے، میجک شو، کڈز شو،پپٹ شو، کڈز مینگو فیشن واک سمیت دیگر تفریحی تقاریب کا انعقاد کیا گیا۔ مینگو فیسٹیول میں لطف آباد فارم، گردیزی فارم دورانی فارم فدک فارم اور انڈسٹریز سمیت آم کے کئی باغبانوں اور آم کی انڈسٹری سے وابسطہ کمپنیز نے سٹالز لگائے۔اس موقع پر وائس چانسلر گجرات یونیورسٹی، میجر(ر) طارق، زاہد حسین گردیزی،چیئر مین PARBڈاکٹر عابد محمود، ڈائریکٹر مینگو ریسرچ انسٹی ٹیوٹ عبدالغفار گیرے وال سمیت دیگر زرعی سائنسدان، شہریوں اور طلباء و طالبات کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔  

فخر امام 

مزید :

ملتان صفحہ آخر -